اربعین حسینی ؑکے خلاف سازش تحریر فرحت عباس
اربعین حسینی ؑکے خلاف سازش تحریر فرحت عباس

اربعین حسینی ؑکے خلاف سازش
قرآن مجید اللہ تعالی کا دائمی کلام ہونے کی وجہ سے ہر دور کے مسائل و مشکلات اور چیلنجز سے انسانیت کو اگاہ کرتاہے آج کل کے دور کو بھی مخاطب ہے چونکہ آج کل فتنوں کا دور کہلاتا ہے ۔فتنہ کے اثرات کی شدت کو بیان کرتے ہوئے اللہ تعالی فرماتا ہے کہ وَالْفِتْنَةُ أَشَدُّ مِنَ الْقَتْلِ یعنی فتنہ قتل وغارت گری سے زیادہ نقصان دہ ہے ۔ معاشرےپر اس کے برے اثرات بہت زیادہ ہیں ۔فتنہ کیا ہوتا ہے اور کب آتا ہے کس طریقہ سے آتاہے اس کو سمجھنے کی ضرورت ہے ۔اسی لیے قران نے دشمن شناسی پر زیادہ زور دیا ہے یہ شیطان تمھارا دشمن ہے ۔شیطان کے دشمنی کے طریقہ کو بھی مکروفریب سے تعبیر کیا ہے ۔دشمن کا دشمنی کا ایک طریقہ فتنہ و فساد ہے جس سے معاشرہ خراب ہو جاتا ہے جس کی وجہ سے معاشرہ کا امن تباہ ہوجاتاہے قتل کی نسبت جو قرآن نے دی ہے اس کی وجہ بھی یہ ہی ہے کہ قتل سے معاشرہ بد امنی کا شکار ہوتا ہے جبکہ فتنہ سے بھی معاشرہ بد امنی کا شکار ہو جاتا ہے ۔
بعض فتنے ایک گھر کے دشمن کی طرف سے کیا جاتا ہے تو وہ گھرتباہ و برباد ہوتا ہے ۔کچھ فتنے کسی خاندان کے خلاف اٹھایا جاتا ہے اس خاندان کی تباہی کے دہانے پر جا پہنچاتاہے لیکن کچھ فتنے ایسے ہوتے ہیں جو امت اور قوم کے خلاف اٹھائے جاتے ہیں ۔یہ قومی فتنہ گر قوموں میں بد امنی پیدا کرنا چاہتا ہے
امام حسین علیہ السلام کی ذات گرامی صرف شیعہ اثنا عشری کے لیے نہیں بلکہ حسین پوری انسانیت کی رشد وہداتت کے لیے تشریف لائیں ہیں ۔امام کا چہلم بھی تمام انسان مناتے ہیں اس چہلم کوصدام حکومت کے خاتمہ کے بعد بہت زیادہ پزیرائی حاصل ہو ئی ہے جس کو دینا بھر کے میڈ یا نے کوریج بھی دی ہے کربلا و نجف کے زائرین جوق در جوق دنیا بھرسے تشریف لاتے ہیں ان کا عراق کی عوام چاہے شیعہ ہے یا سنی حتی غیر مسلم بھی عراق میں ان کا استقبال کرتے ہیں ۔اس اجتما ع کی تعداد ہزاور لاکھوں نہیں بلکہ کروڑوں تک جاپہنچی ہے ۔
امت مسلمہ کے دشمن کو اس اجتما ع سے ڈر لگنا شروع ہو گیا ہے جس کی وجہ سے اس نے ، اس اجتما ع کے خلاف سازش شروع کر دی راستہ فتنہ والااختیا ر کیا جس کے طریقہ درجہ ذیل ہیں ۔
عراقی عوام سے مظاہرکروانا
شعیہ چاہے جس درجہ کا بھی ہو کبھی بھی امام حسین ؑ کے زائر کی خدمت سے دست بردار نہیں ہوتا جبکہ امت مسلمہ کے دشمن عناصر نے کرایہ کے مظاہرین کو عراق کے مختلف شہروں میں سڑکوں پر لایا ہے ۔ان کی دہاڑی کتنی ؟کب تک تعین کی گئ ہے اس کا خدا ہی جانے۔
بی بی سی لند ن کا پروجیکٹ
بی بی سی ایک نشریاتی ادارہ ہے جس کو امت مسلمہ کے خلاف نختلف موضوعا تی کام دیا جاتا ہے جس کا گذشتہ سالوں میں امام علی ؑ کے روضہ پر کتاب خانہ نہ ملنے پر کالم شائع ہوا تھا جو کہ بالکل جھوٹ پہ مبنی تھا ۔اورکل چار اکتوبر ۲۰۱۹ کو نکاح متعہ پر علما ء کے خلاف کالم شائع کیا گیا جس میں انتشار پھیلانے والی باتیں لکھیں تا کہ مقامات مقدسہ سے تمام لوگوں کے دل میں نفرت پیدا ہو۔ شرعی مسئلہ کو فتنہ بنانے کی کوشش کی گئی ہے ۔
مراجع عزام کے خلاف سازش
شیعہ اثنا عشری کے سب سے بڑے مرجع آٰت اللہ سید سیستانی دام ظلہ کے خلاف محازآرائی قائم کرنے کی کوشش کی گئی اللہ تعالی نے ان کو شر سے محفوظ کر لیا
اربعین کے مجمع میں انتشار کے لیے لوگوں کو تیار کیا گیا ہے ۔
چہلم اما م حسین ؑ کے موقع پر جان والے زائرین کو کچھ افراد نے افراط و تفریط کے فتنہ وپراپیگنڈا کے پھلانے کی کو شش کریں گئں ۔جس لرائی جھگڑے کا اندیشہ ہو سکتا ہے مومنین اس سے باخبر رہیں اور احتیاط کریں۔
حسینت کا دشمن بےبانگ دہل سن لیے کہ زائرین امام حسین ؑ کے خلاف ہر دور میں سازش ہوتی رہی ہے لیکن کبھی بھی زائرین زیارت سے نہیں رکے اور نہ رکیں گئیں بلکہ ایک وقت ایسا بھی گزرا ہے کہ ظالموں نے زیارت امام ؑ کے لیے شرط عائد کی کہ بازو کٹاو ا نی پڑے گئی ۔ زائرین نے ایسا کر کے دیکھایا ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here