جعفریہ پریس – قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی  نے حضرت اویس قرنی کے مزار اقدس کے شہید اور ترکی میں کوئلے کی کان میں دھماکہ کے نتیجہ میں 282 ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ شام میں حضرت اویس قرنی صحابی رسول ؐکے مزار اقدس پر حملہ اسلامی و انسانی قدروں کے خلاف ہے۔ ا نہوں نے کہا کہ بظاہر تو مذہب کا نام استعمال کیا جا رہا ہے درحقیقت یہ ہوس اقتدار کی جنگ ہے۔ ایسے واقعات سے مسلمانوں کی دل آزاری اور جذبات مجروح ہوتے ہیں، ان واقعات کی روک تھام کے لئے جامع پالیسی بنائی جائے اور اس دہشت گردی کو روکنے کے لئے او آئی سی اپنا کردار ادا کرے۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان نے مزید کہا کہ مسلمان مخالف قوتیں مسلمان ممالک میں ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت حالات خراب کروا رہی ہیں، اسلامی ممالک کو ان واقعات کی روک تھام کے لئے مثبت کردار ادا کرنا ہوگا اور شدت پسند گروپوں کی حوصلہ شکنی کرنا ہوگی اور یہ وقت کی ضرورت ہے کہ باہمی اتفاق و اتحاد کا مظاہرہ کرتے ہوئے شدت پسند گروپوں کی جانب سے کی جانے والی سازشوں کو ناکام بناتے ہوئے ان کا قلع قمع کیا جائے۔ اسلامی تحریک پاکستان کے سربراہ  نے حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی ترکی کے مغربی علاقے سوما میں کوئلے کی کان میں دھماکہ کے نتیجہ میں 282 ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جدید ترین سائنسی ترقی کے باجود اس خوفناک مسئلہ پر قابو نہیں پایا جاسکا۔ اس واقعات میں جاں بحق ہونے والے کان کنوں کے لواحقین سے اظہار افسوس اور صبر کی تلقین کرتے ہیں اور دکھ کی اس گھڑی میں ترک حکومت کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here