• قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقو ی کی ا پیل پر بھارت میں توہین آمیز ریمارکس پر ملک گیر احتجاج
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی مختلف شخصیات سے ان کے لواحقین کے انتقال پر تعزیت
  • اسلامی تحریک پاکستان کا گلگت بلتستان حکومت میں شامل ہونے کا فیصلہ
  • علماء شیعہ پاکستان کے وفدکی وفاقی وزیر تعلیم سے ملاقات نصاب تعلیم پر گفتگو مسائل حل کئے جائیں
  • بلدیاتی انتخابات سندھ: اسلامی تحریک پاکستان کے امیدوار بلامقابلہ کامیاب
  • یاسین ملک کو دی جانے والی سزا ظلم پر مبنی ہے علامہ شبیر حسن میثمی شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • ملی یکجہتی کونسل اجلاس علامہ شبیر میثمی نے اہم نکات کی جانب متوجہ کیا
  • کراچی میں دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان صوبہ سندھ
  • اسلامی تحریک پاکستان کا اعلی سطحی وفد گلگت بلتستان کے دورے پر اسکردو پہنچے گا
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان ۸ شوال یوم جنت البقیع کے عنوان سے منائے گی

تازه خبریں

علامہ عارف الحسینی کی27ویں برسی کے موقع پر قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کا خصوصی پیغام

قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے علامہ عارف الحسینی کی 27 ویں برسی کی مناسبت سے اپنے خصوصی پیغام میں کہا ہے کہ قائد شہید علامہ عارف الحسینی نے مارشل لاء دور میں جہاں عوام کو ان کے حقوق کا شعور دیا وہاں ہر مکتب کے عوام کو اتحاد و وحدت اور ہم آہنگی کا درس دیا اور عملی طور پر اتحاد بین المسلمین کے لیے خدمات انجام دے کر پاکستان کے مسلمانوں کو ایک لڑی میں پرونے کی بھرپور کو شش کی۔ اسی فکر کو آگے بڑھاتے ہوئے ہم پاکستان میں عوام کو درپیش مسائل اور اتحاد بین المسلمین کے عملی فروغ کے لیے جدوجہد میں مصروف ہیں۔اتحاد و وحدت کا فروغ اور اس جدوجہد کے لئے اعلامیہ وحدت ،علماء کرام کی نفاذ شریعت سفارشات اورملی یکجہتی کونسل اور متحدہ مجلس عمل جیسے فورمز درحقیقت وہ سنگ میل ہیں جو شہید عارف حسینی کے خوابوں کی تعبیرہیں آج یقیناًان کی روح شادمان ہو گی۔
علامہ ساجد نقوی نے کہا کہ شہید قائدؒ نے پاکستان کی اساس اور بنیاد یعنی اسلام اور جمہوریت کے نفاذ کے لئے روشن رہنمائی فراہم کی۔ شہید قائدؒ نے اپنے اہداف کے حصول کے لئے ایک واضح راستے کا تعین کیا اور اسی راستے کو مدنظر رکھ کر جدوجہد کو آگے بڑھایا اگر موجودہ دور میں اس راستے پر چل کر ان اہداف کے حصول کے لئے جدوجہد کی جائے‘ اپنی داخلی گروہ بندیاں ختم کی جائیں اور شہید قائد کی طرح اعلی فکر اور بلند کردار کے ساتھ آگے بڑھاجائے تو ہم یہ اہداف حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ پاکستان اور عالم اسلام میں منفرد کردار ادا کرسکتے ہیں۔ قائد شہید ؒ نے اپنی تمام زندگی عالمی استعمار کی سازشوں اور طاغوتی چیرہ دستیوں کے خلاف اور محروم و مظلوم طبقات کے حقوق کے لئے جدوجہد میں صرف کر دی اور بالخصوص پاکستان میں بیرونی سازشوں کا بروقت ادراک کر کے ان کے خلاف عملی جدوجہد کر نے کی طرح ڈالی ۔ بیرونی سارشوں کے علاوہ پاکستانی عوام کو درپیش اندرونی سارشوں کو بے نقاب کرنے اور عوامی مشکلات کے حل کے لیے مخلصانہ کاوش بھی شہید حسینیؒ کا خاصہ ہے۔
علامہ ساجد نقوی نے مزید کہا کہ دور حاضر میں شہید کے پیروکاروں کو چاہیے کہ وہ شہید قائد کی شخصیت کا روشن فکری کے ساتھ مطالعہ کریں اور ان کے نقش قدم پر چلتے ہوئے پاکستان میں محروم و مظلوم طبقات کو درپیش مسائل کے حل ، فرقہ واریت کے خاتمے‘ طبقاتی تقسیم ‘بد عنوانی‘ بے راہ روی اورمعاشرتی اور اخلاقی مسائل کے حل کے لیے جدوجہد کریں۔
قائد ملت جعفریہ نے یہ بات زور دے کر کہی کہ وطن عزیز اس وقت تاریخ کے انتہائی نازک دور سے گزر رہا ہے۔ اسکی سالمیت ‘ استحکام‘ استقلال اور خود مختاری کو شدید خطرات لاحق ہیں ۔ پاکستانی عوام شدید مسائل میں گھرے ہوئے ہیں جن کے حل کے لئے ٹھوس اقدامات کی ضرورت ہے اور اتحاد بین المسلمین جیسے فریضے کی ادائیگی کی ضرورت پہلے سے کہیں زیادہ ہے۔ ہمیں ان حالات میں شہید قائد کی سیرت کی روشنی میں ان کی کوششوں کو آگے بڑھانا ہوگا۔ اپنی ذاتی خواہشوں اور آلائشوں کو دور رکھ کرباہمی اتحاد جیسی دولت سے مالامال ہوکر اس جدوجہد میں نیا رنگ پیدا کرنا ہوگا۔اسی طرح امت مسلمہ بین الاقوامی طو رپر جن مصائب و آلام میں مبتلا ہے ان سے نجات حاصل کرنے کے لئے بھی ہمیں شہید قائد کے افکار اور جدوجہد کی روشنی میں ایک متفقہ اور جاندار موقف اختیار کرنا ہوگا ۔