قائد ملت جعفریہ پاکستان کی لاہور داتا دربار کے باہر ہونے والے دہشت گرد حملے کی شدید الفاظ میں مذمت
قائد ملت جعفریہ پاکستان کی لاہور داتا دربار کے باہر ہونے والے دہشت گرد حملے کی شدید الفاظ میں مذمت
قائد ملت جعفریہ پاکستان کی داتا دربار دہشتگرد حملے کی شدید الفاظ میں مذمت،قیمتی جانوں کے نقصان پر دکھ کا اظہار 
 دہشتگردی کے خاتمے کےلئے کارروائیوں کو مزید تیز اور موثر بنایا جائے، علامہ ساجد نقوی 
شیعہ علماءکونسل پاکستان کی جانب سے بھی اظہار مذمت،غمزدہ خاندانوں سے اظہار ہمدردی
 اسلام آباد08مئی 2019 (  جعفریہ پریس  ) قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کی داتا ؒدربار دہشت گرد حملے کی شدید الفاظ میں مذمت، قیمتی جانوں کے نقصان پر دلی افسوس کا اظہار، علامہ ساجد علی نقوی کہتے ہیں دہشتگردوں کے خلاف کارروائیوں کو مزید تیز اور موثر کیا جائے، دشمنوں کی سازشوں سے بھی خبردار رہنا ہوگا،صوفیائے کرام کے مزارات اور تمام عبادت گاہوں پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے جائیں ، شیعہ علماءکونسل پاکستان کی جانب سے بھی سانحہ کی شدید الفاظ میں مذمت، غمزدہ خاندانوں سے اظہار ہمدردی 
    بدھ کی صبح دربار داتاؒ صاحب پر ہونیوالے دہشت گردی کے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کہاکہ اس سانحہ میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر دلی دکھ ہے اور جاں بحق ہونیوالے متاثرہ خاندانوں کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور انکے ساتھ مکمل اظہار ہمدردی کرتے ہیں۔ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ پاکستان ایک عرصہ سے دہشت گردی کا شکار ہے، دہشت گردی کے خاتمے کےلئے مزید موثر اور تیز کارروائیاں کرنے کی ضرورت ہے، دہشت گردی کے خاتمے کےلئے متحرک نیٹ ورک ختم کرنا ہوں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ تمام مذاہب و مکاتب فکر کی عبادت گاہوں اور صوفیائے کرام کے مزارات کی سیکورٹی کو مزید بہتر اور فول پروف بنایا جائے ۔ 
    دوسری جانب شیعہ علماءکونسل پاکستان کی جانب سے بھی سانحہ داتا دربار کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی ہے،، سیکرٹری جنرل شیعہ علماءکونسل علامہ عارف حسین واحدی نے اپنے مذمتی بیان میں کہاکہ دہشتگرد ایک مرتبہ پھر سر اٹھارہے ہیں جسے بھرپور انداز میں کچلنا ہوگا، دہشت گرد انسانیت کے دشمن ہیں،انہوںنے سانحہ میں جاں بحق ہونیوالے افراد کے لواحقین سے اظہار ہمدردی و تعزیت کرتے ہوئے کہاکہ غم کی اس گھڑی میں متاثرہ خاندانو ں کے ساتھ ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here