• قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقو ی کی ا پیل پر بھارت میں توہین آمیز ریمارکس پر ملک گیر احتجاج
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی مختلف شخصیات سے ان کے لواحقین کے انتقال پر تعزیت
  • اسلامی تحریک پاکستان کا گلگت بلتستان حکومت میں شامل ہونے کا فیصلہ
  • علماء شیعہ پاکستان کے وفدکی وفاقی وزیر تعلیم سے ملاقات نصاب تعلیم پر گفتگو مسائل حل کئے جائیں
  • بلدیاتی انتخابات سندھ: اسلامی تحریک پاکستان کے امیدوار بلامقابلہ کامیاب
  • یاسین ملک کو دی جانے والی سزا ظلم پر مبنی ہے علامہ شبیر حسن میثمی شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • ملی یکجہتی کونسل اجلاس علامہ شبیر میثمی نے اہم نکات کی جانب متوجہ کیا
  • کراچی میں دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان صوبہ سندھ
  • اسلامی تحریک پاکستان کا اعلی سطحی وفد گلگت بلتستان کے دورے پر اسکردو پہنچے گا
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان ۸ شوال یوم جنت البقیع کے عنوان سے منائے گی

تازه خبریں

صحافت ایک اہم ذمہ داری ہے قائد ملت جعفریہ پاکستان | عالمی یوم آزادی صحافت پر پیغام

 معاشرے کی اصلاح کیلئے شعبہ صحافت کا کلیدی کر دار ہے، قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقوی

 معاشرے کی اصلاح کیلئے شعبہ صحافت کا کلیدی کر دار ہے، قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقوی

قلم کا آزاد ا ستعمال ا ور کسی دباﺅ میں آئے بغیر کلمہ حق بلند کرنا اور مظلوم کی آواز بننے کی روایات اور خصوصیات کو ختم نہیں ہو نا چاہیے ، قائد ملت جعفریہ
حقائق کے برعکس خبریں اشاعت کرنا یا کر دار کشی صحافت کی اعلیٰ اقدا کو پامال کرنے کے مترادف ہے ، یوم آزادی صحافت کے مناسبت سے میڈیا ارکان سے گفتگو
راولپنڈی /اسلام آباد 5مئی 2022ء (  جعفریہ پریس پاکستان  ) قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کہتے ہیں کہ یوم آزادی صحافت کا مقصد کسی دباو کے بغیر آزاد اور ذمہ دارانہ اطلاعات عوام تک پہنچانا ہے اور اس میں کوئی دو رائے نہیں ہے کہ صحافت لوگوں کی رہنمائی کرنے، افراد کو ایک دوسرے سے جوڑنے، معلومات بہم پہچانے،تبصروں کے ذریعہ عوام الناس کو حقائق سے روشناس کرانے اور اصلاح و معاشرہ کا نام ہے۔علامہ ساجد نقوی نے یوم آزادی صحافت کے مناسبت سے بذریعہ ٹیلی فونک میڈیا ارکان سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ عالمی سطح پر یوم آزادیِ صحافت کا دن منانے کامقصدبھی دراصل اہل صحافت کا اس بات کی تجدید کر نا ہے کہ کسی بھی دباو ، لالچ ،انتہا پسند عناصر یا ریاستی منفی دباو کے بغیر آزاد ، صحیح اور ذمہ دارانہ اطلاعات عوام تک پہنچانے کے بنیادی حق کےلئے اپنا مثبت کردار ادا کریں۔ علامہ ساجد نقوی نے کہا کہ یہ بات مشاہدے میںآئی ہے کہ دنیا کے کئی ممالک میں آزادی صحافت پر مکمل جبکہ متعدد ممالک میں جزوی پابندی عائد رہی ہیں۔اس وقت پاکستان میں بھی صحافی شدید مشکلات و مسائل سے دوچار ہیں۔ لیکن اس کے باوجود سنجیدہ صحافیوں نے اپنے فرائض سے منہ نہیں پھیر ا بلکہ درست اور جلد معلومات اور حقائق عوام تک پہنچائے ہیں۔انہوں نے کہا کہ معاشرے کی اصلاح کیلئے شعبہ صحافت کا کلیدی کر دار ہے۔ قلم کا آزاد اور کسی دباﺅ میں آئے بغیر کلمہ حق بلند کرنا اور مظلوم کی آواز بننے کی روایات اور خصوصیات کو ختم نہیں ہو نا چاہیے بلکہ ان کی حوصلہ افزائی کی جائے البتہ سنسنی خیز سرخیاں اور بریکنگ نیوز بنانے کے لئے بے بنیاد اور جھوٹی خبر بنانے والوں کی حوصلہ شکنی کی جائے اس لئے کہ آزادی صحافت کا مطلب یہ قطئی نہیں ہے کہ صحافت کے ذریعے ملک میں بد امنی پھیلائی جائے اور حکمرانوں یا کسی خاص پارٹی کے مخصوص ایجنڈے کو پورا کرنے اورمخالفین کو زیر کرنے کےلئے منصوبہ بندی کے ساتھ کی جانے والی کسی بھی منفی مہم کو تقو یت فراہم کی جائے ۔ حقائق کے برعکس خبریں اشاعت کرنا یا کر دار کشی صحافت کی اعلیٰ اقدا کو پامال کرنے کے مترادف ہے ۔آخر میں علامہ ساجد نقوی نے پاکستان میں آزادی صحافت کےلئے جد وجہداورجانیں قربان کرنے والوں، دھمکیوں اور تشدد سے مرعوب نہ ہونے والوں اور حق کی آواز بلند کرنے والوں کو خراج تحسین کیا ۔