• قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقو ی کی ا پیل پر بھارت میں توہین آمیز ریمارکس پر ملک گیر احتجاج
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی مختلف شخصیات سے ان کے لواحقین کے انتقال پر تعزیت
  • اسلامی تحریک پاکستان کا گلگت بلتستان حکومت میں شامل ہونے کا فیصلہ
  • علماء شیعہ پاکستان کے وفدکی وفاقی وزیر تعلیم سے ملاقات نصاب تعلیم پر گفتگو مسائل حل کئے جائیں
  • بلدیاتی انتخابات سندھ: اسلامی تحریک پاکستان کے امیدوار بلامقابلہ کامیاب
  • یاسین ملک کو دی جانے والی سزا ظلم پر مبنی ہے علامہ شبیر حسن میثمی شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • ملی یکجہتی کونسل اجلاس علامہ شبیر میثمی نے اہم نکات کی جانب متوجہ کیا
  • کراچی میں دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان صوبہ سندھ
  • اسلامی تحریک پاکستان کا اعلی سطحی وفد گلگت بلتستان کے دورے پر اسکردو پہنچے گا
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان ۸ شوال یوم جنت البقیع کے عنوان سے منائے گی

تازه خبریں

ولادت باسعادت حضرت عباس ؑ کے موقع پر قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کا خصوصی پیغام

ولادت باسعادت حضرت عباس ؑ کے موقع پر قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کا خصوصی پیغام

ولادت باسعادت حضرت عباس ؑ کے موقع پر
قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کا خصوصی پیغام

 راولپنڈی / اسلام آباد 28 مارچ 2020ء ( جعفریہ پریس پاکستان  ) قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے فرزندامیر المومنین حضرت علی ابن طالب ؑ حضرت عباس ؑکی ولادت باسعادت4شعبان اعظم کے پرمسرت موقع کی مناسبت سے عالم اسلام کو ہدیہ تبریک پیش کرتے ہوئے کہا کہ حضرت عباس ابن علی ؑ دنیا میں وفاشعاری اور جانثاری کا اعلی نمونہ تھے ۔ جس طرح امیر المومنین علی ابن ابی طالب نے پیغمبر گرامی کے ساتھ وفاشعاری کی داستانیں رقم کیں اسی طرح حضرت عباس ؑ نے نواسہ پیغمبر کے ساتھ وفا اور محبت کے تمام تقاضے پورے کئے۔ ان کی شخصیت جبر و آمریت اور ظلم و بربریت کے خلاف قیام کا استعارہ ہے اور حق پرستوں اور وفا شعاروں کے لئے رہنمائی کا ذریعہ اور روشنی کا مینار ہے۔
علامہ ساجد نقوی نے کہا کہ مزید کہا کہ حضرت عباس ؑ کی زندگی کا ایک اہم ترین پہلو یہ بھی کہ وہ اپنے والد گرامی امیر المومنین ؑ کی طرح علم و حکمت اور زہد و تقوی کا نمونہ بھی تھے یہی وجہ ہے کہ انہیں مرد فقیہ اور عبد صالح جیسے القابات سے نوازا گیا۔ واقعہ کربلا میں لشکر حسینی ؑ کے سپہ سالار کی حیثیت سے جرات و بہادری اور دلیری و وفاشعاری کی جو لازوال داستان حضرت عباس ؑ نے رقم کی وہ درحقیقت ان کے والد گرامی امیر المومنین علی ابن ابی طالب ؑ کی پاکیزہ اور بے مثال تربیت کا عظیم نمونہ تھی۔حضرت عباس ؑ نے اپنے والد گرامی کی سرپرستی میں کفار و مشرقین اور منافقین کے خلاف ہر محاذ پر صف اول میں مجاہدانہ کردار ادا کیا اور شجاعت و بہادری کے ساتھ ساتھ علم و حکمت کے بھی جوہر دکھائے جن پر عمل پیرا ہوکر آج بھی اپنی انفرادی واجتماعی زندگیوں کو سنواراجاسکتا ہے۔
قائد ملت جعفریہ نے اس پرمسرت موقع پر عالم اسلام کی توجہ اس جانب مبذول کرائی کہ اگر امت مسلمہ حضرت عباس علیہ السلام کے اسوہ اور دلیری و وفاشعاری کو اپنائے تو ظلم و جبر اور بدی کا پرچار کرنے والی قوتوں کی سازشوں کو ناکام بنایا