پورےملک میں تسلسل سے دہشتگردی حکومت کی ناکامی ہے علامہ رمضان توقیر
پورےملک میں تسلسل سے دہشتگردی حکومت کی ناکامی ہے علامہ رمضان توقیر

پورےملک میں تسلسل سے دہشتگردی حکومت کی ناکامی ہے علامہ رمضان توقیر

ڈیرہ اسماعیل خان ( جعفریہ پریس) شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی نائب صدر علامہ رمضان توقیر نے کہا ہے کہ پورے پاکستان میں منظم انداز میں تسلسل سے ہونے والی دہشت گردی کی وارداتیں حکومتی رٹ کی مکمل ناکامی کا ثبوت ہیں، کوئٹہ سبزی منڈی میں غربت اور مہنگائی سے تنگ بچوں کا رزق کمانے والے مزدوروں کو دہشت گردوں کے طرف سے بے رحمانہ انداز میں قتل عام کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے موجودہ حکومت کی طرف سے دہشت گردانہ کاروائیوں اور دہشت گردوں کے حوالے سے چشم پوشی پر پوری پاکستانی قوم کو شدید تشویش ہے انھوں نے گزشتہ روز جامع مسجد زہراء سلام اللہ علیہ کوٹلہ سیداں میں نماز جمعہ کے بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آپریشن ضرب عضب میں سیکورٹی فورسز کے نوجوانوں و افسران کی لاتعداد قربانیوں کے بعد پورے ملک میں امن و امان کی صورتحال بہتر اور دہشت گردوں و سہولت کاروں کی بیخ کنی ممکن ہو رہی تھی لیکن موجودہ تبدیلی کی دعویدار حکومت کی طرف سے ملک میں جاری آپریشنز اور امن و امان کی صورتحال کو مذید بہتر بنانے یا برقرار رکھنے کے بجائے دہشت گردوں کے دوبارہ منظم ہونے پر تشویشناک خاموشی حکومت وقت کے لیے جہاں لمحہ فکریہ ہے وہیں پوری پاکستانی کو شدید تشویش کے پیش نظر ایک بار پھر پوری پاکستانی قوم عدم تحفظ کا شکار ہو چکی ہے، ڈیرہ اسماعیل خان میں مسلسل ٹارگٹ کلنگ و دہشت گردانہ کاروائیوں سمیت ڈیرہ اسماعیل خان میں منظم انداز میں ہونے والی اغواء کی وارداتوں کے حوالے سے انھوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ انتظامیہ کی کارکردی غیر تسلی بخش ہے، بگوانی جنوبی اغواء کی واردات اور نواب میں اغواء کی کوشش کے دوران قتل عام کے حوالے سے انھوں نے کہا کہ انتظامیہ تاحال لواحقین اور متاثرین کو مطمئن نہیں کر سکی، علامہ رمضان توقیر نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان کے نتائج تاحال حوصلی افزاء نہیں دکھائی دے رہے ڈیرہ اسماعیل خان اور کوئٹہ میں پاک فوج آپریشنز کو مذید مؤثر بناتے ہوئے دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف بے رحمانہ انداز میں کاروائیوں کو تیز کرتے ہوئے قلع قمع کیا جائے، انھوں نے کہا کہ تبدیلی سرکار ملک میں امن و امان کے حوالے سے خصوصی دلچسپی لیتے ہوئے حقیقی مثبت تبدیلی لائے،

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here