ڈی آئی خان میں ذاکر سمیت دو افراد کی ٹارگٹ کلنگ قابل مذمت ہے ،علامہ عارف واحدی
ڈی آئی خان میں ذاکر سمیت دو افراد کی ٹارگٹ کلنگ قابل مذمت ہے ،علامہ عارف واحدی

ڈی آئی خان میں ذاکر سمیت دو افراد کی ٹارگٹ کلنگ قابل مذمت ہے ،علامہ عارف واحدی
دہشتگرد انسانیت و امن کے دشمن ،حکومت اور قانون نافذ کرنے والے ادارے شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے میں یکسر ناکام نظر آتے ہیں ۔
نئے پاکستان میں بھی کوئی شہری دہشتگردی سے محفوظ نہیں ، واقع میں ملوث مجرموںکو قانون کے شکنجہ میں جکڑ کر تختہ دار پر لٹکایا جائے ،مطالبہ

راولپنڈی / اسلام آباد 25فروری 2019ء (     جعفریہ پریس   )شیعہ علماءکونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے ڈیرہ اسماعیل خان میں تکفیری دہشتگرد وں کے ہاتھوں ذاکر اہلبیت ؑ قیصر عباس شائق اور دلاور کی ٹارگٹ کلنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کر تے ہوئے کہا کہ دہشتگرد انسانیت اور امن کے دشمن ہیں، دہشتگردوں کا کوئی مذہب نہیں ، دہشتگردوں سے علماء،ذاکرین ، نمازیوں ، مسافروں سے لے کر اعلیٰ افسران تک کوئی محفوظ نہیں، عرصہ دراز سے ایک سازش کے تحت ملک کے حالات خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، نئے پاکستان میں بھی کوئی شہری دہشتگردی سے محفوظ نہیں،حکومت اور قانون نافذ کرنے والے ادارے شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے میں یکسر ناکام نظر آتے ہیں حکومت قوم کو حقائق سے آگاہ کرے اور شہریوں کے تحفظ کو یقینی بنائے ۔

    ان خیالات کا اظہار انہوںنے ڈیرہ اسمعیل خان میںٹارگٹ کلنگ کے واقع پر ردعمل کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ دہشت گردی کے واقعات میں کمی نہیں آرہی اور دہشت گردی کی وارداتوں سے یہ بات واضح ہوتی جارہی ہے کہ دہشت گرد ملک میں امن کے دشمن ہیں۔انہوں نے اس موقع پرکہاکہ ملک دشمن عناصر ایک سازش کے تحت وطن عزیز میں فرقہ وارانہ فسادات کروا کر اپنے مذمو م مقاصد حاصل کرناچاہتے ہیں ملک میں دہشتگردوں کےخلاف جاری آپریشن ردالفساد بھی شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام نظر آتا ہے اس لئے کہ چند مٹھی بھر تکفیری دہشتگرد جب چاہیں جہاں چاہیں واردات کرکے فرار ہونے میں کامیاب ہو جاتے ہیںجس سے حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی کا پول کھل کر عوام کے سامنے آجاتا ہے اور دہشتگردی کے باعث شہریوں میں عدم تحفظ کا عنصر پایا جارہا ہے ۔ اس موقع پر انہوں نے کہاکہ ملک میں عام شہریوں سے لے کر ججز، فوجی افسران، علماءکرام، ذاکرین عظام سمیت بے یارو مددگار مسافر، صحافیوں سمیت کسی بھی جان محفوظ نہیں، عبادت گاہوں سے لےکر اقلیتی برادری تک تمام طبقات دہشت گردی کا شکار ہیں۔ پورا ملک بد امنی کی تصویر بنا ہوا ہے اس لئے اب وقت ہے عوام کو اصل حقائق سے آگاہ کیا جائے کیونکہ جب تک دہشت گردوں کے سرپرستوں کو بے نقاب کرکے انہیں کیفر کردار تک نہیں پہنچایا جاتا اس وقت تک ملک میں امن و استحکام کا خواب شرمندئہ تعبیر نہیں ہوسکتا۔ بعد ازاں انہوںنے مذکورہ واقعات میں جاں بحق افراد کےلئے دعائے مغفرت اور لواحقین کےلئے صبر جمیل کی دعا کی اور مطالبہ کیا کہ قاتلوں کو فی الفور گرفتار کرکے تختہ دار پر لٹکایا جائے ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here