کرتارپور راہداری کا افتتاح خوش آئند، بھارتی ہٹ دھرمی کو نرمی میں تبدیل کیا جائے ، علامہ ساجد نقوی 
کرتارپور راہداری کا افتتاح خوش آئند، بھارتی ہٹ دھرمی کو نرمی میں تبدیل کیا جائے ، علامہ ساجد نقوی 

کرتارپور راہداری کا افتتاح خوش آئند، بھارتی ہٹ دھرمی کو نرمی میں تبدیل کیا جائے ، علامہ ساجد نقوی 
فلسطینیوں سے یکجہتی کےلئے ضروری ہے کہ فلسطینیوں کے حقوق کی جدوجہد کو سپورٹ کیاجائے اور ان پر ڈھائے جاے والے مظالم بند کرائیں جائیں ۔قائدملت جعفریہ
ترقی کےلئے امن ضروری، ترقی کوریڈور امن کی کنجی سے کھلے گا، مذاکرات کے حامی لیکن ملکی وقار اور خودمختاری پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائےگا۔

    اسلام آباد29 نومبر2018 ء( جعفریہ پریس    ) قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاہے کہ کرتارپور راہداری کا افتتاح خوش آئند ، البتہ بھارت کی ہٹ دھرمی کاتوڑ نکالنا ہوگا،ترقی کوریڈور کی کنجی امن ہے جس کےلئے باہمی مذاکرات ضروری، پاکستان نے ہمیشہ خطے کے امن کےلئے ہاتھ آگے بڑھایا، ہندوستان کی جانب سے مثبت جواب نہیں دیاگیا،گزشتہ 6دن میں مقبوضہ کشمیر میں 24شہید اور درجنوں زخمی کردیئے گئے ، مذاکرات کے حامی لیکن ملکی وقار اور خود مختاری مظلوم کشمیر یوں کی حمایت پر کوئی سمجھوتہ نہ کیا جائے۔
    ان خیالات کا اظہار انہوںنے کرتارپور راہداری کے افتتاح کے حوالے سے اپنے رد عمل اور وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ کرتار پور راہداری کا افتتاح خوش آئند، پاکستان سکھ مذہب کےلئے مقدس سرزمین ہے یہاں آنےوالے یاتریوں کو خوش آمدید کہتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاک بھارت بہتر تعلقات خطے کے امن کےلئے ضروری ہیں لیکن اس کےلئے بھارتی ہٹ دھرمی کا توڑ نکالنا ہوگااس کےلئے ایسی ڈپلومیسی اختیار کی جائے تاکہ یہ ہٹ دھرمی نرمی میں تبدیل ہوجائے۔
    علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ صرف گزشتہ چھ دن کے دوران مقبوضہ کشمیر میں ظلم کے پہاڑ توڑ دیئے گئے، 24افراد کو شہید اور 50سے زائد افراد کو زخمی کیاگیا، کیا ایسا رویہ کسی بھی جمہوری ملک کے شایان شان ہوا کرتاہے، ہندوستان کشمیر میں گزشتہ طویل عرصہ سے انسانی حقوق کی ان پامالیوں کا مرتکب ہورہاہے جس کی مثال کم ہی ملتی ہیں۔ ہم چاہتے ہیں معاملات مذاکرات کے ذریعے حل کئے جائیں اور مہذب معاشرے اور قومیں مذاکرات کے ذریعے مسائل حل کرکے ہی ترقی کرتی ہیں کیونکہ ترقی کے کوریڈور کو کھولنے کی کنجی امن ہے لیکن یہ امن باہمی رضا مندی سے ہی قائم ہوسکتاہے، اس امن کےلئے ملکی وقار اور خود مختاری کو مدنظر رکھتے ہوئے معاملات آگے بڑھائے جائیں۔ علامہ ساجدنقوی نے آج فلسطینیوں کے عالمی دن کے موقع پر فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کہاکہ ہم فلسطینیوں کی حمایت جاری رکھیں گے اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں اور تمام اسلامی ممالک بھی خاص کر دار ادا کریں اور فلسطینیوں کے حقوق کی جدوجہد کو سپورٹ کیاجائے اور ان پر ڈھائے جاے والے مظالم بند کرائیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here