پاکستان میرا وطن ٗرول آف لاء ہمارا ماٹو ٗقیام امن ہماری ذمہ داری ہے ، قائدملت جعفریہ پاکستان علامہ ساجد نقوی
ہم شہری حقوق سے ددستبردار نہیں ہونگے اور نہ ہی عزاداری سید الشہداءؑ سے پیچھے ہٹیں گے، قائد ملت جعفریہ
ملک بھر سے لوگ گرفتار ہوئے ہیں مارے گئے ہیں ان کی اب تک شناخت نہیں ہوئی قوم کو بتایا جائے قائد ملت جعفریہ
Saturday 25 November 2017
’’من البحر سے الی النحر‘‘ کے نعرے کے ساتھ کربلا کی جانب ’’اربعین پیدل مارچ‘‘ کا آغاز
Shiite Muslim pilgrims carrying religious banners walk through a main road in Baghdad on their way to the shrine central city of Karbala on December 9, 2014 where they take part in the Arbaeen religious festival. Arbaeen marks the 40th day after Ashura which commemorates the seventh century killing of Prophet Mohammed's grandson, Imam Hussein. The holy Iraq city of Karbala sees millions of Shiite visitors every year over the 40-day period of mourning that follows the annual commemoration of the death of Imam Hussein, who was slain by the forces of the caliph Yazid in 680 AD. AFP PHOTO / AHMAD AL-RUBAYE

عراق کے دور ترین علاقوں سے کربلا کی جانب امام حسین علیہ السلام کے چہلم کی مناسبت سے پیدل مارچ کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق، صوبہ بصرہ کے ضلع فاو کے علاقے راس البیشہ سے ایک ہزار پر مشتمل ’’کاروان اربعین‘‘ کربلا کی جانب روانہ ہو گیا ہے۔
اس قافلہ کی روانگی عراق کے مراجع کے نمائندوں اور صوبہ بصرہ کے علماء کی موجودگی میں منعقد ہوئی ایک تقریب کے بعد شروع ہوئی۔
یہ پروگرام مرجع تقلید آیت اللہ سید محمد سعید حکیم کے دفتر کے تعاون سے منعقد ہوا جس میں اس سال کے اربعین کے پیدل مارچ کے لیے ’’من البحر الی النحر‘‘( یعنی سمندر سے کٹی ہوئی گردن تک) کا نعرہ انتخاب کیا گیا۔
یاد رہے کہ گزشتہ پانچ سالوں سے اربعین کے ملین پیدل مارچ کا سلسلہ شروع ہونے سے پہلے ایک تقریب کا انعقاد کیا جاتا ہے جس میں اس سال کے پیدل مارچ کے لیے ایک نعرے کا انتخاب کیا جاتا ہے۔
راس البیشہ سے پیدل مارچ کرنے والے زائرین کو تقریبا ۷۰۰ کلو میٹر کا فاصلہ طے کرنا ہو گا جو انہوں نے بیس دنوں میں طے کرنا ہے۔
واضح رہے کہ گزشتہ کئی سالوں سے اربعین سید الشہداء کے موقع پر عراق سمیت دنیا کے گوشے گوشے سے عاشقان امام حسین(ع) کروڑوں کی تعداد میں کربلا کا سفر کرتے ہیں اور جناب زینب سلام اللہ علیہا کی سنت حسنہ کا احیاء کرتے ہوئے اہل بیت(ع) اطہار کو شہدائے کربلا کے چہلم کا پرسہ دیتے ہیں۔

Comments

اس خبر کے متعلق آپ کی رائے
متعلقہ خبریں