عرب میڈیا کے مطابق مصری حکومت نے العریش کی مسجد میں نمازِ جمعہ کے وقت نمازیوں کے قتلِ عام میں ملوث دہشت گردوں کے خلاف تیز رفتار کارروائی کا آغاز کرتے ہوئے کئی دہشت گردوں کو ہلاک کردیا ہے۔ مصری فوج کے ترجمان کرنل تامر الرفاعی نے میڈیا کو بتایا کہ گزشتہ روز العریش کے علاقے میں الروضہ مسجد پر حملے میں ملوث دہشت گردوں کے خلاف فوجی کارروائی میں ’’الحد‘‘ کے مقام پر دہشت گردوں کے ٹھکانوں اور گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں متعدد دہشت گرد ہلاک اور زخمی ہوگئے۔

کرنل تامر الرفاعی کے مطابق دہشت گردوں کے خلاف کارروائیاں ابھی جاری ہیں جبکہ یہ آپریشن دہشت گردوں کے مکمل خاتمے تک جاری رکھا جائے گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز نمازِ جمعہ کے دوران مصری صوبے سینا کے علاقے العریش میں دہشت گردوں نے مسجد میں داخل ہوکر خطبہ جمعہ کے دوران نمازیوں پر بم پھینکے اور فائرنگ کی جس سے 305 نمازی شہید جبکہ 128 زخمی ہوگئے۔ دہشت گرد 4 گاڑیوں میں سوار ہو کر آئے تھے۔ اسلامی جمہوریہ ایران سمیت دنیا بھر میں اس دہشت گرد حملے کی شدید مذمت کی گئی اور اسے انتہائی بزدلانہ اور غیر انسانی کارروائی قرار دیا گیا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here