کورونا وائرس بین الاقوامی اور انسانی المیے کی شکل اختیار کرچکا، تمام سٹیک ہولڈرز کو سرجوڑ کر بیٹھنا ہوگا
کورونا وائرس بین الاقوامی اور انسانی المیے کی شکل اختیار کرچکا، تمام سٹیک ہولڈرز کو سرجوڑ کر بیٹھنا ہوگا

کورونا وائرس بین الاقوامی اور انسانی المیے کی شکل اختیار کرچکا، تمام سٹیک ہولڈرز کو سرجوڑ کر بیٹھنا ہوگا
مشکل صورتحال میں ریاست اور عوام کو تنہا نہیں چھوڑیں گے، ہمارے رضاکار میدان میں موجود، مزید بھی تعاون کے لئے تیار ہیں۔
جہاں ہر پاکستانی کو انفرادی کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے وہیں ریاست بھی زخیرہ اندوزی اور خوف کے خاتمے کے لئے اقدام کرے،قائد ملت جعفریہ
راولپنڈی2020 ء (   جعفریہ پریس )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہا ہے کہ کورونا وائرس ایک بین الاقوامی اور انسانی المیے کی شکل اختیار کرچکا، پڑوسی ممالک سمیت مغربی ممالک کی صورتحال سب کے سامنے ہے، وقت کا تقاضا ہے کہ ملک کے تمام سٹیک ہولڈرز، جید علماءکرام، سرکردہ دانشور سر جوڑ کر بیٹھیں اور حالیہ صورتحال سے نمٹنے کی حکمت عملی مرتب کریں، زخیرہ اندوزی اور ملک میں خوف کی صورتحال کو ختم کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے، ہم ہمیشہ کی طرح موجودہ مشکل صورتحال میں نہ صرف ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہیں بلکہ میدان میں رہ کر رضاکارانہ سرگرمیاں بھی انجام دے رہے ہیں- ہر پاکستانی کو بھی انفرادی طور پر اپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے
ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعظم عمران خان کے قوم سے خطاب پر ردعمل دیتے ہوئے کیا- انہوں نے کہاکہ کورونا وائرس ایک بین الاقوامی اور انسانی المیے کی شکل اختیار کرچکا ہے، ہمارے دوست اور پڑوسی ممالک چین، ایران، اٹلی سمیت پونے دو سو سے زائد ممالک اس وائرس کا کا سامنا کررہے ہیں جبکہ ہمارے پڑوسی ممالک اس کا مقابلہ کررہے ہیں اور پاکستان میں بھی تیزی سے یہ وبا پھیلتی جارہی ہے، جس کے تدارک کے لیے اب بھی ہنگامی اور سنجیدہ اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے، اس حوالے سے کچھ تجاویز بھی سامنے آچکی ہیں اگر اس وبا کا علم ہوتے ہی اقدامات کئے جاتے تو شائد صورت حال آج زیادہ بہتر ہوتی البتہ موجودہ ملکی اور بین الاقوامی صورتحال کا اس بات کی متقاضی ہے کہ ملک کے تمام سٹیک ہولڈرز ،سرکردہ دانشور اور سرکردہ علماءملک بیٹھیں اور ایک بات پر متفق ہو کر یا کثرت رائے سے ایک نقطے پر اتفاق کر کے قوم کی رہنمائی کریں اور حکمت عملی مرتب کریں-
ان کا مزید کہنا تھا کہ اس مشکل صورتحال میں پہلے کی طرح ہم مکمل تعاون کے لئے نہ صرف تیار بلکہ ہم میدان میں موجود اور رضاکارانہ سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں اور مزید تعاون کے لیے بھی تیار ہیں، ان کا مزید کہنا تھا اس حوالے سے جہاں ہر پاکستانی کو اپنا انفرادی کردار ادا کرنا ہے وہیں ریاست اور حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ خوف کی صورتحال اور زخیرہ اندوزی کا تدارک کرنے کے لئے اقدامات اٹھائے اور عوام پر اعتماد کی فضا کو مزید بہتر بنایا جائے- انہوں نے کہاکہ پاکستانی قوم نے ہر مشکل وقت میں خراب معاشی حالات کے باوجود اپنے ہم وطنوں کا ساتھ دیا ہے۔آخر میں انہوں نے کرونا وائرس کیلئے تمام احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کرنے پر زور دیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here