سانحہ بیروت کے خطے پرگہرے اثرات مرتب ہونے کااندیشہ ہے۔قائد ملت جعفریہ علامہ ساجدنقوی

سانحہ بیروت کے خطے پرگہرے اثرات مرتب ہونے کااندیشہ ہے۔علامہ ساجدنقوی
مسلم اُمہ،بیروت دھماکے پرصدمے اورتشویش میں مبتلاہے،قائد ملت جعفریہ
راولپنڈی /اسلام آباد6اگست2020ء( جعفریہ پریس پاکستان)قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے لبنان کے دارالحکومت بیروت کی بند ر گاہ پر ہونے والے دھماکے میں سینکڑوں انسانی جانوں کے ضیاع ،ہزاروں شہریوں کے زخمی ہونے اورلاکھوں انسانوں کے بے گھرہونے پر گہرے رنج و دکھ کا اظہارکرتے ہوئے کہاکہسانحہ بیروت کے خطے پرگہرے اثرات مرتب ہونے کااندیشہ ہے۔اگروہ حادثہ تھاتوبھی اوراگرصہیونی قوتوں کی کارستانی تھی توبھی، اعلیٰ سطحی تحقیقات وقت کاتقاضاہیں۔انہوں نے کہاکہ مسلم اُمہ بیروت دھماکے سے صدمے اورتشویش میں مبتلاہے۔ ہم اس سانحہ پرافسوس اوردکھ کااظہارکرتے ہیں۔ہماری ہمدردیاں اورجذبات لبنانی عوام کے ساتھ ہیں۔زخمیوں کی جلدصحت یابی کی دعاکے ساتھ ،جاں بحق افرادکے ورثاسے ہمدردی اورتعزیت کرتے ہیں۔
واضح رہے کہ لبنان کی دارلحکومت بیروت کی بندرگاہ پر ہو نے والادھماکا اتنا شدید تھا کہ اس کے اثرات 240 کلومیٹر دور مشرقی بحیرہ روم کے ملک قبرص میں محسوس کیے گئے جہاں لوگوں نے اِسے زلزلہ سمجھا۔اس دھماکے سے بندرگاہ اور اس کے نواح میں بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی ہے اور کاروباری اور رہائشی عمارتیں اور گاڑیاں تباہ ہو گئیں، دھماکے میں اب تک 137 افراد جاں بحق اور 5ہزار سے زائد زخمی ہونے کی اطلاع ہے جبکہ 3لاکھ سے زیادہ افرادبے گھرہوگئے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here