مشاورتی اجلاس ملی یکجہتی کونسل پاکستان
29 ستمبر2020 لاہور

ملی یکجہتی کونسل پاکستان کا مرکزی مشاورتی اجلاس ، متحدہ جمعیۃ اہل حدیث کی میزبانی میں لاہور میں 29 ستمبر 2020 کو منعقد ہوا۔ اجلاس کی صدارت کونسل کے صدر صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر نے کی ۔ اجلاس میں کونسل کی 15 رکن جماعتوں اور تین اداروں نے شرکت کی ۔ اجلاس میں پاکستان کی موجودہ صورتحال کا جائزہ لیا گیا ۔ تمام قائدین نے اس امر پر زور دیا کہ اسلام ، مسلمانوں اور پاکستان کے خلاف دشمنوں کی حالیہ سازشوں کا بمقابلہ اتحاد و اتفاق سے کیا جا سکتا ہے ۔ اجلاس کی نظامت کونسل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کی ۔ اجلاس کے آخر میں اتفاق سے مندرجہ ذیل قرارداد منظور کی گئی :
ہم31 اکابرعلماء کے 22نکات، قرارداد مقاصد، آئین کی اسلامی دفعات، ملی یکجہتی کونسل کے ضابطہ اخلاق، پیغام پاکستان پرمتحد ہیں۔ یہ ہماری مشترکہ دستاویزات ہیں۔ ہم تمام اسلامیان پاکستان سے اپیل کرتے ہیں کہ ان دستاویزات پر کاربند رہیں اور دین کی مشترکہ تعلیمات کی بنیاد پر آپس میں متحد رہیں۔ ہم عقیدہ توحید، تمام انبیاء و رسل کی رسالت پر ایمان اور آنحضرتؐ کی ختم نبوت پر ایمان، قرآن کے غیر محرف آخری کتاب ہونے پر ایمان اور عقیدہ معاد پر متفق و متحد ہیں۔ ہم آنحضرتؐ کے اہل بیت اطہار، صحابہ کرام اور امہات المومنین کے احترام پر متفق و متحد ہیں اور ان ہستیوں کی توہین کرنے والوں سے ہم اظہار برأت کرتے ہیں۔
ہم اسلام اور پاکستان کے دشمنوں کی سازشوں کے خلاف سیسہ پلائی ہوئی دیوار بنیں گے اور اس اسلامی ریاست کو کمزور نہیں ہونے دیں گے اور اس میں اسلامی تعلیمات کی بالادستی کے لیے مشترکہ جدوجہد جاری رکھیں گے۔
ہم سمجھتے ہیں کہ پاکستان میں فرقہ واریت کی موجودہ لہر کے پیچھے اسلام دشمن قوتیں کارفرما ہیں۔ امریکہ، اسرائیل اور بھارت جو اسلام اور مسلمانوں کے دشمن ہیں انھیں پاکستان کی جوہری اور اسلامی حیثیت بہت کھٹکتی ہے۔ ہم واضح کرتے ہیں کہ ہم کشمیر کی تحریک حریت کے ساتھ کھڑے ہیں اور اس کی آزادی اور پاکستان سے اس کے الحاق کے سوا اس کا کوئی حل قبول نہیں کریں گے۔ ہم یقین رکھتے ہیں کہ فلسطین فلسطینیوں کا ہے۔ اسرائیل ایک ناجائز اور غاصب صہیونی ریاست ہے جو استعماری قوتوں نے اپنے مقاصد کے لیے قائم کررکھی ہے۔ اس کے خاتمے کے سوا خطے میں امن کے قیام کی کوئی سبیل نہیں۔ جو اسلامی ممالک اسرائیل کو تسلیم کر چکے ہیں ہم ان سے اپیل کرتے ہیں کہ اپنے فیصلے کو واپس لیں تاکہ عالم اسلام متحد ہو کر فلسطین اور قبلہ اول کی آزادی کے لیے اقدام کر سکے۔اجلاس میں پیر حضرت حمیدالدین سیالوی کی رحلت پر تعزیت پیش کی گئی اور ان کی مغفرت کے لیے دعا کی گئی ۔تمام حاضرین نے متحدہ جمعیۃ اہل حدیث کے امیر علامہ سید ضیاءاللہ شاہ بخاری کی طرف سے اجلاس کی میزبانی پر ان کا شکریہ ادا کیا۔
ملی یکجہتی کونسل کے اس مشاورتی اجلاس میں
علامہ عارف حسین واحدی (سیکرٹری جنرل شیعہ علماء کونسل )
جناب لیاقت بلوچ صاحب(جماعت اسلامی)
علامہ سید ضیاء اللہ شاہ بخاری (امیر متحدہ جمعیت اہل حدیث)
پیر غلام رسول اویسی (سربراہ تحریک اویسیہ)
مولانا ملک عبدالرؤف (متحدہ علماء کونسل)
مرزا ایوب بیگ (تنظیم اسلامی)
سید ثاقب اکبر ڈپٹی سیکرٹری جنرل ملی یکجہتی کونسل ،
سید نثار علی ترمذی (البصیرہ)
علی رضا نقوی (امامیہ آرگنائزیشن)
مولانا جعفر علی میر (جامعہ عروۃ الوثقیٰ)
حافظ عبدالغفار روپڑی (جماعت اہل حدیث)
پیر سید محمد صفدر گیلانی (جمعیت علمائے پاکستان)
میر آصف اکبر (منہاج القرآن)
مولانا مختار احمد خان سواتی (جمعیت اتحاد العلماء)
پیرزادہ برہان الدین (علماء و مشائخ رابطہ کونسل)
سید شاہد حسین گردیزی (پنجتن پاک مشائخ کونسل)
حسن فاروق (تحریک جوانان پاکستان)اور دیگر راہنماؤں نے شرکت کی ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here