یمن پر جارحیت کی مخالف سیاسی جماعتوں اور تنظیموں کے اتحاد نے الصراری گاؤں اور اس کے آس پاس کے علاقوں میں آل سعود کے زرخرید ایجنٹوں کی جارحیت کی مذمت کی ہے۔

العالم کی رپورٹ کے مطابق یمن کی سیاسی جماعتوں کے اس اتحاد نے ایک بیان جاری کر کے آل سعود کے تکفیری ایجنٹوں کے ہاتھوں یمن میں گھروں اورمساجد کو تباہ اور انھیں نذر آتش کرنے نیز عورتوں بچوں اور بوڑھوں کو قتل اور انھیں بے گھر کرنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ یہ زرخرید ایجنٹ مختلف قسم کے ہتھیار اور اجتماعی قتل کے طریقے استعمال کر کے نسلی تصفیہ کرنا چاہتے ہیں۔

اس بیان میں اس جرم پر عالمی برادری کی خاموشی پر شدید تنقید کرتے ہوئے تعز اور یمن کے باشعور افراد سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ الصراری گاؤں کے لوگوں کی جان بچانے اور ان کی مدد و حمایت کے لیے سنجیدہ اور ذمہ دارانہ اقدام کریں۔

اس بیان میں تمام بین الاقوامی اداروں اور دنیا کے حریت پسندوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ اس سلسلے میں اپنی ذمہ داریوں پر عمل کریں۔ بیان میں اقوام متحدہ، سعودی اتحاد کے رکن ملکوں اور ان کے ایجنٹوں کو قانونی، اخلاقی اور انسانی لحاظ سے ان جرائم کا ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here