شام کے صدر بشار الااسد نے کہا ہے کہ مغرب نے شام کے اقتدار سے انھیں ہٹانے کے بارے میں اپنے مواقف سے پیچھے ہٹ گیا ہے جو شامی عوام کی بڑی کامیابی ہے۔

شام کے صدر بشار اسد نے برطانوی اخبار کو انٹرویو میں کہا ہے کہ شام کی موجودہ صورت حال اس وقت حکومت کے حق میں ہے اور مغرب، شام کی حکومت پر طرح طرح کے الزامات عائد کرنے کے باوجود ان کی حکومت کو باقی نہ رکھنے کے بارے میں اپنے مواقف سے پیچھے ہٹنے پر مجبور ہو گیا۔

انھوں نے کہا کہ بحران شام کو صرف سیاسی طریقے سے حل کیا جا سکتا ہے۔ بشار اسد نے کہا کہ انھوں نے شام کو بحران سے باہر نکالنے کے لئے کسی بھی اقدام سے گریز نہیں کیا ہے۔

شام کے صدر نے کہا کہ امریکہ اور مغربی ممالک، جو دہشت گردوں کی حمایت کر رہے ہیں، داعش کے اقدامات پر کوئی ردعمل نہیں دکھا رہے ہیں البتہ جب روس نے قدم اٹھایا تو دہشت گرد پیچھے ہٹنے پر مجبور ہو گئے۔

 

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here