• تعلیم یافتہ نسل ، ملک و قوم کی ترقی کی ضمانت ہے، علامہ ڈاکٹر شبیرحسن میثمی
  • کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت

تازه خبریں

آیت اللہ مہدوی کنی کے انتقال پرقائد انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای کا تعزیتی پیغام

قائد انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے پرہیزگارعالم مجاہد،حضرت آیت اللہ مہدوی کنی رضوان اللہ علیہ کے انتقال پر اپنے تعزیتی پیغام میں کہا کہ یہ پرہیزگار عالم دین ہرجگہ اور ہر وقت ایک عالم دین ، ایک سچے سیاستداں اورایک انقلابی کی حیثیت سے ظاہر ہوئے اورحالیہ برسوں کے تمام واقعات میں اپنے تمام بھاری اور سنگين وزن کو حق اور حقیقت کے پلڑے میں قراردیا۔
ایرانی خبررساں ذرائع کے مطابق قائد انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے پرہیزگار عالم مجاہد،حضرت آیت اللہ مہدوی کنی رضوان اللہ علیہ کے انتقال پر اپنے تعزیتی پیغام میں ملک کے تمام اہم میدانوں میں حضرت امام خمینی (رہ) کے وفادار اور سچے دوست کے شجاعانہ نقش و کردار کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ پرہیزگار عالم دین ہر جگہ اور ہر وقت ایک عالم دین ، ایک سچے سیاستداں اور ایک انقلابی کی حیثیت سے ظاہر ہوئے اور حالیہ برسوں کے تمام واقعات میں اپنے تمام بھاری اور سنگين وزن کو حق اور حقیقت کے پلڑے میں قراردیا۔
رہبر معظم انقلاب اسلامی کے پیغام کا متن حسب ذیل ہے:
بسم اللہ الرحمن الرحیم
افسوس اور دکھ کے ساتھ ہم کو اطلاع ملی کہ پرہیزگار عالم مجاہد،حضرت آیت اللہ آقائ حاج شیخ محمد رضا مہدوی کنی رضوان اللہ علیہ نے دارفانی کو وداع کہہ کر اپنے دوستوں اور ارادتمندوں کو سوگ اور غم میں مبتلا کردیا ہے یہ بزرگ عالم دین انقلاب اسلامی کے صف اول کے مجاہدین ، مؤثر شخصیات ، اسلامی جمہوری نظام کے صمیمی دوستوں اور حضرت امام خمینی (رہ) کے سچے، غیور اور وفادار ساتھیوں میں سے تھے اور مرحوم نےانقلاب کے دوران ملک کے تمام اہم میدانوں میں اپنا شجاعانہ انداز اور واضح طور پر نقش و کردار ادا کیا۔ انقلابی کونسل کی رکنیت،  اس کے بعد اسلامی نظام کی تشکیل کے آغاز میں انقلابی کمیٹیوں کی تشکیل،سے لیکر وزارت داخلہ، وزارت عظمی کے عہدوں کو اسلامی جمہوریہ کے سخت ترین دور میں قبول کیا اسی طرح علم و دانش کے فروغ میں بھی نماياں کام انجام دیا اور مؤمن و صالح جوانوں کی تعلیم و تربیت ، امام صادق (ع) یونیورسٹی کی تاسیس سے لیکر تہران کے امام جمعہ کے عہدوں پر فائز رہے اور سرانجام خبرگان کونسل کے عہدے پر فائز ہوئے۔ہر جگہ اور ہر وقت مرحوم نے ایک عالم دین، ایک سیاستداں اور ایک انقلابی کی حیثیت سے اپنے صریح مؤقف کو بیان کیا اور ہرگز ذاتی ، حزبی اور قبائلی جذبات کو اپنی وسیع سرگرمیوں پر اثر انداز نہیں ہونے دیا۔
اس بزرگ عالم دین نے اپنے بھاری اور سنگین وزن کو حالیہ برسوں کے تمام حوادث اور واقعات میں ہمیشہ حق اور حقیقت کے پلڑے میں قراردیا اور اسلامی انقلابی نظام کے دفاع میں کسی بھی کوشش سے دریغ نہیں کیا۔ ان کی پاک روح پر اللہ تعالی کی رحمت اور رضوان نازل ہو۔
میں ، مرحوم کے معزز خاندان اور ان کے عالیقدر بھائی ، ایرانی عوام ، علماء اور مرحوم کے تمام شاگردوں اور دوستوں کو دل کی گہرائی سے تعزيت اور تسلیت پیش کرتاہوں اور اللہ تعالی کی بارگاہ سے مرحوم کے درجات کی بلندی کے لئے دعا کرتا ہوں۔
سید علی خامنہ ای