• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

ایٹمی میدان میں خود کفالت حاصل کر نے کے بعد ملک کی ترقی میں حائل رکاوٹوں کو بھی دور کرنا ہوگا،علامہ عارف حسین واحدی

جعفریہ پریس – شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے یوم تکبیر کے موقع پر پوری قوم کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں ایٹمی میدان میں خود کفالت حاصل کر نے کے بعد ملک کی ترقی میں حائل رکاوٹوں کو بھی دور کرنا ہوگا ۔پاکستانی قوم میں ہر قسم کا ٹیلنٹ موجود ہے اگر ہم ایٹمی میدان میں خود کفالت حاصل کرسکتے ہیں توہمیں معاشی میدان سمیت دیگر شعبہ جات میں بھی خود کفیل ہونا ہو گا تب ہی ہم ترقی یافتہ ملکوں کی صف میں شامل ہو سکتے ہیں ۔
علامہ عارف حسین واحدی نے کہا کہ اُس وقت جب انڈیا نے ایٹمی دھماکے کئے تو اس کے بعد پاکستا ن پر ایٹمی دھماکے نہ کرنے کے لئے بہت زیادہ دباؤ تھا لیکن اس وقت وہ جو فیصلہ کیا گیا وہ ملک اور قوم کے مفاد میں تھا، اور وطن کے سائنسدانوں نے ایٹمی دھماکہ کرکے پوری قوم کو تحفظ فراہم کیا اس پر ہمیں فخر ہے انہو ں نے مزید کہا کہ ہم دفاعی میدان میں خود کفیل ہو چکے ہیں اب ہمیں دفاعی میدان میں خود کفیل ہونے کا ساتھ ساتھ معاشی میدان میں بھی خود کفیل ہونے کی اشد ضرورت ہے ،ہماری ساری توجہ اقتصادی خودکفالت کی طرف ہونی چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایٹمی ملک میں فرقہ واریت،دہشت گردی، جہالت، اندھیرے اور بے روز گاری نہیں ہوتی ، آج ملک میں بد امنی، غربت، جہالت اور لوڈشیڈنگ کو ختم ہونا چاہیے تھا لیکن افسوس کہ ایسا نہ ہوا،فرقہ واریت ،انتہا پسندی اور دہشت گردی عروج پر ہے، دہشتگردی اور انتہاپسندی کے خاتمے کے بغیرکوئی ملک ترقی نہیں کرسکتا، ملک سے فرقہ وارانہ دہشت گردی کے خاتمے کے لئے بھرپور اقدامات کئے جائیں۔ اس لئے کہ پاک وطن کو سب سے زیادہ خطرہ بیرونی دشمن کے بجائے اندرونی دہشت گردو ں سے خطرہ ہے جس کے لئے سنجیدہ اقدامات کئے جاناوقت کی اہم ضرورت ہے۔اس وقت امن و امان کی صورتحال بہتر نہ ہونے کے باعث غیر ملکی سرمایہ کاری نہیں ہو رہی بلکہ ملکی سرمایہ کار بھی عدم تحفظ اور دہشت گردی سے تنگ آکر اپنے کاروبار بیرون ملک شفٹ کر رہے ہیں ۔اس وقت بے روز گاری ،کرپشن اور مہنگائی عروج پر ہے ۔عوام کو معاشی ریلیف دینے کے لئے اقدامات کئے جائیں۔ ایمنسٹی انٹر نیشنل کی رپورٹ بھی باعث تشویش ہے ۔