• مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس
  • اپنے تنظیمی نظام اور سسٹم کو مضبوط سے مضبوط کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ ورکر کنونشن
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات علمی حلقوں میں خلا مشکل سے پُر ہوگا علامہ شبیر میثمی

تازه خبریں

لدھیانوی کسی کا کفر ثابت کرنے سے پہلے اپنا مذہب ثابت کرے کہ وہ کس مذہب سے تعلق رکھتا ہے، علامہ شیخ مرزا علی

جعفریہ پریس –  (گلگت دنیور) لدھیانوی کسی کا کفر ثابت کرنے سے پہلے اپنا مذہب ثابت کرے کہ وہ کس مذہب سے تعلق رکھتا ہے- ان خیالات کا اظہار صدر شیعہ علما کونسل گلگت ڈویژن و امام جمعہ والجماعت مرکزی امامیہ جامع مسجد دنیورعلامہ شیخ مرزا علی نے نماز جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت گلگت بلتستان میں طوفان بدتمیزی برپا کیا گیا ، مگر حکومت اور انتظامیہ خاموش رہی جو کہ قابل آفسوس ہے ۔ صدر شیعہ علما کونسل گلگت ڈویژن نے کہا کہ لدھیانوی کسی کا کفر ثابت کرنے سے پہلے اپنا مذہب ثابت کرے کہ وہ کس مذہب سے تعلق رکھتا ہے اور کس مکتب کی ترجمانی کررہا ہے جبکہ ملک کی ۲۶ دینی جماعتیں ملی یکجہتی کونسل میں موجود ہیں اورملک میں فرقہ واریت کے خاتمہ کےلیے کوشاں ہیں ۔ علامہ شیخ مرزا علی نے کہا کہ لدھیانوی پہلے مولانا فضل الرحمن ، منور حسن ، لیاقت بلوچ اور دیگر علما کا کفر ثابت کرئے جنہوں نے قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت علامہ سید ساجد علی نقوی کے پیچھے نمازیں پڑھی ہیں اور اس کے بعد ملت جعفریہ کو چیلنچ کریں ۔ انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے آغا محترم علامہ سید راحت حسین الحسینی نے گزشتہ روز چہلم کے جلوس میں جواب دیا ہے اورپوری قوم آغا محترم کے ساتھ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی ذمہ داری عوام کے بنیادی حقوق کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے اس حوالے سے حلقہ ۳ کے عوام کے حقوق کا خیال رکھا جائے، عوام اپنے حقوق کے لیے احتجاج کرسکتے ہیں کیوں کہ اس کا حق آیئن پاکستان نے اُن کو دیا ہے ۔