• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

مرکز کے پالیسی کی مکمل حمایت۔ جے ایس او پاکستان کل احتجاجی ریلیوں کودھرنوں میں تبدیل کر دے گی۔ دنیا دیکھے گی کہ ملت تشیع اپنے قومی قیادت کے ایک اشارے پر ملک کا کونہ کونہ جام کر دے گی

جعفریہ پریس – جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے سینئر نائب صدر عبداللہ رضا نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی پالیسی پر ہم مکمل طور پر عمل پیرا ہیں اور مرکز کے پالیسی کی مکمل حمایت کا اعلان کرتے ہوئے جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کل پورے ملک میں جمعہ کی نماز کے بعد احتجاجی ریلیاں نکالے گی اور اگر ہمارے مطالبات پورے نہ کیے گئے تو پھر ان احتجاجی ریلیوں کو دھرنوں میں تبدیل کر دیا جائے گا۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم اپنے قائد کے حکم کے انتظار میں تھے اور ہمارے نظریں اپنے قائد کی جانب لگی ہوئی تھیں۔ اب جب ہمارے محبوب قائد نے ہمیں حکم دے دیا ہے توہم حکومت پر واضح کر رہے ہیں کہ اگر حکومت نے کل نماز جمعہ تک ہمارے مطالبات نہ مانے اور دہشت گردوں کے خلاف ٹارگٹڈ آپریشن نہ شروع کیا گیا تو پھر جے ایس او پاکستان پورے ملک کو جام کر دے گی۔
انہوں نے کہا کہ اب ہم طفل تسلیوں میں آنیو الے نہیں جب تک ہمارے قائد ہمیں حکم دیں گے ہم سڑکوں پر ہی رہیں گے اور دنیا دیکھے گی کہ کس طرح ملت تشیع اپنے قومی قیادت کے ایک اشارے پر ملک کا کونہ کونہ جام کر دے گی۔حکومت کے پاس ابھی بھی وقت ہے کہ وہ ہوش کے ناخن لیکر مطالبات کو تسلیم کرتے ہوئے فوری طور پر آپریشن کا فیصلہ کر کے آپریشن شروع کیا جائے۔بصورت دیگر حکومت دیکھے گی کہ سڑکوں پر ایک طوفان برپاہو گا اور ہر طرف سے لبیک یا حسینؑ کی صدائیں بلند ہو رہی ہو گی۔