• تعلیم یافتہ نسل ، ملک و قوم کی ترقی کی ضمانت ہے، علامہ ڈاکٹر شبیرحسن میثمی
  • کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت

تازه خبریں

مسلمان قوموں کو چاہیئے کہ سیاسی آزادی کے ذریعے خود کو اسلام کی منظور نظر آزادی کی منزل پر پہنچائیں، قائد انقلاب اسلامی

  جعفریہ پریس  – وجہ تخلیق کائنات حضرت ختمی مرتبت صلی اللہ علیہ والہ وسلم اور تاجدار امامت و ولایت کے چھٹے درخشاں ستارے حضرت امام جعفر صادق(ع) کے یوم ولادت  باسعادت کے موقع پر اسلامی جمہوریہ ایران کے بعض اعلی حکام اور تہران میں منعقدہ ستائیسویں بین الاقوامی وحدت اسلامی کانفرنس کے شرکاء نے قائد انقلاب اسلامی حضرت آیۃ اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقات کی- اس موقع پر قائد انقلاب اسلامی حضرت آیۃ اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے اس مبارک دن کی مبارکباد پیش کرتے ہوئے آنحضرت (ص) کی توقعات کو پورا کئے جانے کی ضرورت پر تاکید کے ساتھ فرمایا کہ اسوقت مسلمانوں کو اس بات کا پورا احساس ہو چلا ہے کہ انہیں اتحاد و وحدت کی اشد ضرورت ہے اور اس میں کوئی شک و شبہ نہیں ہونا چاہیئے کہ اس اتحاد و یکجہتی کی تحریک کا بہترین نتیجہ برآمد ہوگا۔
حضرت آیۃ اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے کانفرنس کے شرکاء سے اپنے خطاب میں تاکید کے ساتھ فرمایا کہ مسلمانوں کو چاہیئے کہ اتحاد کے خلاف پیدا ہونے والے ہرعامل کا مقابلہ کریں اور یہ سب کا ایک اہم اور بڑا فریضہ ہے، انہوں نے مزید فرمایا کہ مسلمان قوموں کو چاہیئے کہ اپنے اندر فکری آزادی پیدا کرتے ہوئے سیاسی آزادی کے حصول کے ذریعے شریعت اسلام کے مطابق دینی عوامی حکومتوں کے قیام کے ذریعے خود کو اسلام کی منظور نظر آزادی کی منزل پر پہنچائیں۔
ولی امر مسلمین نے فرمایا کہ عالمی استکبار، گذشتہ پینسٹھ برسوں سے فلسطین کا نام ختم کرنے کی کوشش کررہا ہے مگر کبھی کامیاب نہیں ہوسکا اور حزب اللہ لبنان کے خلاف غاصب صیہونی حکومت کی مسلط کردہ تینتیس روزہ جنگ اور اسی طرح غزہ کے خلاف اس کی مسلط کردہ بائیس روزہ اور آٹھ روزہ جنگ میں مسلمانوں نے اس بات کو ثابت کیا ہے کہ وہ ایک زندہ قوم ہے اور وہ امریکی سرمایہ کاری کے باوجود غاصب اور جعلی صیہونی حکومت کو طمانچہ لگانے میں کامیاب رہی ہے۔
آپ نے اسلامی ملکوں میں استکباری حکومتوں کی جانب سے تکفیری دہشتگردوں کیلئے جاری ہمہ جہتی حمایت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا کہ ان تکفیری گروہوں کے مقابلے میں، جو عالم اسلام کیلئے ایک بڑا خطرہ ہیں، مکمل ہوشیاری کی ضرورت ہے۔
ولی امر مسلمین نے بیداری و آگاہی کو مسلمانوں کی سعادت کا واحد ذریعہ قرار دیتے ہوئے فرمایا کہ اسلامی ملکوں کے بے نظیر وسیع‏ قدرتی ذرائع، ممتاز جغرافیائی پوزیشن، گرانقدر تاریخی میراث اور اقتصادی و معاشی ذرائع، اتحاد و وحدت اور یکجہتی کے زیر سایہ مسلمانوں کو عزّت و احترام اور ارتقاء کی منازل پر پہنچا سکتے ہیں۔
آخرمیں قائد انقلاب اسلامی حضرت آیۃ اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے ستائیسویں بین الاقوامی وحدت اسلامی کانفرنس کے اہم اور معززمہمانوں سے روبوسی اور مصاحفہ کیا-