• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

ہزارہ ٹاؤن ایک مرتبہ پھر دہشتگردوں کے نشانے پر- خواتین سمیت 8 مومنین شہید جبکہ 25 مومنین زخمی

جعفریہ پریس – ہفتے کی شام کوئٹہ کے علاقے ہزارہ ٹاؤن علی آباد روڈ پر ایک مرتبہ پھر دہشتگردوں کیجانب سے خودکش دھماکہ کیا گیا۔ دھماکہ شیعہ آبادی کے علاقے بسم اللہ شادی ہال کے قریب اُس وقت کیا گیا، جب عام لوگوں کی ایک بڑی تعداد عید کی خریداری میں مصروف تھی۔ اب تک اس دہشتگردانہ دھماکے میں خواتین سمیت 8 مومنین شہید جبکہ 25 مومنین  زخمی ہوئے ہیں۔ دھماکے کے فوراً بعد ریسکو ذرائع کی جانب سے زخمیوں کو سی ایم ایچ ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی بڑی تعداد نے علاقے کو گھیرے میں لیکر ابتدائی کارروائی شروع کر دی ہے۔ یاد رہے علی آباد ہزارہ ٹاؤن کا وہی علاقہ ہے جہاں اس سے قبل بھی تین مرتبہ دہشتگردی کے بڑے واقعات رونماء ہوچکے ہیں۔ ۔ ہزارہ ٹاؤن چاروں اطراف سے ایف سی بلوچستان کے حصار میں تھا، علاقے میں اتنی بھاری سکیورٹی ہونے کے باوجود دہشتگردی کے اس واقعے کا رونما ہونا، ریاستی اداروں کی کارکردگی پر ایک بڑا سوالیہ نشان ہے۔
قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے سانحہ کی شدید الفاظ میں مذمت کیا اور شیعہ علماء کونسل پاکستان نے بھی سانحے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ایک بیان میں شیعہ علماء کونسل کے رہنماوں کا کہنا تھا کہ اگر پچھلے سانحات کی تحقیقات کرکے رپورٹ کو منظر عام لایا جاتا اور خونی دھشتگردوں کو گرفتار کرکے کیفر کردار تک پہنچایا جاتا آج ملک بھی میں اس قسم کے سانحات کا سامنا نہ کرنا پڑتا لیکین افسوس سے دیکھ رہے ہیں کہ انتظامیہ دھشتگردوں کو گرفتار کرنے کی جگہ دباو میں آکر قاتلوں کو رہا کر کے مقتولین پر ہی ہاتھ ڈال رہی ہے جو کہ سراسر ظلم اور زیادتی اورنا انصافی ہے ۔آخر میں رہنماوں نے شہداء کی مغفرت کی دعا کرتے ہوئے ورثا اور لواحقین کے ساتھ یکجہتی کا اعلان کیا