• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

راولپنڈی میں کشیدہ صورتحال کے باعث رات بارہ بجے تک کرفیو نافذ کر دیا گیا

جعفریہ پریس – راولپنڈی میں کشیدگی کےباعث شہر کے 19 تھانوں کی حدود میں آج رات بارہ بجے تک کرفیو نافذ کر دیا گیا اور یونیورسٹیوں اور دیگر تعلیمی اداروں کے آج ہونے والے امتحانات بھی ملتوی کر دیئے گئے ہیں۔ راولپنڈی میں فائرنگ میں ہلاکتوں کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے ڈپٹی کمشنر اور آر پی او سے رپورٹ طلب کر لی ہے اور شرپسندوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا حکم بھی دیا۔  شہر کی کشیدہ صورتحال کے پیش نظر رات بارہ بجے پنجاب حکومت نے کمشنر راولپنڈی کی درخواست پر راول ٹاؤن اور پوٹھوہار ٹاؤن کے 19 تھانوں کی حدود میں کرفیو نافذ کر دیا ہے۔ وزیر قانون پنجاب رانا ثنا اللہ کا کہنا ہے کرفیو امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے کیلئے لگایا، جلد اٹھا لیا جائے گا۔
تفصیلات کے مطابق راولپنڈی میں حالات اس وقت کشیدہ ہوئے جب عاشورہ کا مرکزی جلوس چوک فوارہ پہنچا تو قریبی مسجد سے تکفیری نعروں سمیت عاشورہ کے مرکزی جلوس پر پتھراؤ کیا گیا ،  اطلاعات کے مطابق اس سے قبل مسجد کے مولوی نے واقعہ کربلا کے خلاف نازیبا الفاظ استعمال کئے تھے جس پر عاشور کا پرامن جلوس احتجاج میں تبدیل ہوگیا،  تا ہم موقع سے فائدہ اٹھا کر شر پسند عناصرنے جلاؤ گھیراؤ کا سلسلہ شروع کردیا اور اطراف کی عمارتوں کی چھتوں سے فائرنگ کی  –  ابتک کی اطلاعات کے مطابق فائرنگ کے نتیجے میں 7 افراد جاں بحق جبکہ 35 سے زائد زخمی ہوگئے۔
ذرائع کے مطابق نامعلوم مشتعل افراد نے مسجد کے قریب دکانوں کو بھی آگ لگا دی، جس سے کئی دکانوں میں موجود سامان جل کر خاکستر ہوگیا۔ انتظامیہ نے حالات کو کنٹرول کرنے کیلئے رینجرز اور فوج کے دستے طلب کر لئے ۔  دوسری جانب یوم عاشور کا مرکزی جلوس اپنے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا امام بارگاہ قدیمی پہنچ کر اختتام پذیر ہوگیا۔