• علامہ شبیر حسن میثمی کی اسپیکر قومی اسمبلی
    راجہ پرویز اشرف سے اسپیکر چیمبر میں ملاقات
  •  متنازعہ فوجداری ترمیمی بل کو یکسر مستردکرتے ہیں ، شیعہ علماءکونسل پاکستان
  • متنازعہ ترمیمی بل: علماء و ذاکرین مشاورتی اجلاس کل کراچی میں منعقد ہوگا
  • مقدس کتاب قرآن مجید کی بے حرمتی ی شدید مذمت کرتے ہیں سید راشد حسین نقوی
  • بزرگ علمائے تشیع نے متنازعہ ترمیمی ایکٹ کو مسترد کردیا اعلامیہ جاری
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان ضلع ملتان کا ورکر کنونشن منعقد ہوا جس میں مولانا اعجاز حسین بھشتی ضلی صدر ملتان منتخب ہوئے
  • شیعہ علماء کونسل کی زیر نگرانی متنازعہ بل کے سلسلے میں مختلف جماعتوں کا اجلاس
  • علامہ اسد اقبال زیدی کا ضلع دادو کادورہ اسلامی تحریک کے کارکنان سے ملاقات
  • توہین کے متنازعہ بل کو مسترد کرتے ہیں علامہ رمضان توقیر
  • قومی اسمبلی میں متنازعہ قانون سازی کو مسترد کرتے ہیں جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان

تازه خبریں

حضور اکرم کی ذات اُمت مسلمہ کے لیے وحدت کا مرکز ہے،قائد ملت علامہ ساجد نقوی

نبی کریم کی ذات بابرکات اُمت مسلمہ کے درمیان وحدت و اُخوت کا مرکز ہے۔علامہ سید ساجد علی نقوی

نبی کریم کی ذات بابرکات اُمت مسلمہ کے درمیان وحدت و اُخوت کا مرکز ہے۔علامہ سید ساجد علی نقوی
 امت مسلمہ حیات طیبہ پر عمل پیرا ہوکراور امت واحدہ بن کر اپنا کھویا ہوا مقام دوبارہ حاصل کرسکتی ہے ۔قائدملت جعفریہ پاکستان
اسلام آباد/راولپنڈی13اکتوبر2022( )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے ختمی مرتبت‘ محبوب خدا ‘ پیغمبر اکرم اور امام ششم حضرت امام جعفر صادق ؑ کے میلا د مسعود اور ہفتہ وحدت کے اختتام پر امت مسلمہ کو ہدیہ تبریک پیش کرتے ہوئے پیغام میں کہا ہے کہ قرآن کریم کی تعلیمات کی روشنی میں یہ امت ‘ امت واحدہ ہے اور پیغمبر گرامی کی ذات بابرکات امت مسلمہ کے درمیان وحدت و اخوت اور بھائی چارے و یگانگت کا مرکز و محور ہے اور انکی حیات طیبہ اور سیرت و کردار ہم سے یہ تقاضا کرتا ہے کہ جب ہمارا پختہ یقین ہے کہ ہم سب کا ایک خدا‘ایک رسول ‘ایک قرآن اورایک کعبہ پر ایمان ہے تو چند ایک فروعی نوعیت کے اختلافات کا حل مہذب اندااور شائستگی کے ساتھ علمی سطح پرتلاش کرنے کی عادت ڈالنی چاہیے۔ ہمارے اسی موقف کی تائید بزرگان دین اور مراجع کرام نے بھی کی اور واضح کیا کہ تمام مکاتب اور مسالک کے مقدسات کا احترام لازم اور توہین ممنوع ہے۔
علامہ ساجد نقوی کا کہنا ہے کہ ختمی مرتبت کی حیات طیبہ کے بہت سارے پہلو ہیں جن پر عمل پیرا ہوکر امت مسلمہ امت واحدہ بن کر اپنا کھویا ہوا مقام دوبارہ حاصل کرسکتی ہے ‘ اعلی و ارفع اوصاف و کمالات کا مجموعہ ہستی کی سیرت طیبہ نہ صرف امت محمدی بلکہ پوری انسانیت کے لئے نمونہ عمل ہے تو پھر کیوں امت مسلمہ انتشار و خلفشار میں مبتلا ہے حالانکہ وہ سیرت و سنت نبوی کے اخلاق حسنہ‘ اعلی انسانی اوصاف و کمالات ، مہرومحبت ، علم و حکمت ، تدبر و تحمل ، صبر و شکر، عدل و انصاف ، اخوت و بھائی چارگی، خدمت خلق اور حقوق انسانی کی انجام دہی اور اسوئہ حسنہ کی تقلید سے سربلندی و سرفرازی اور درجہ کمال حاصل کرسکتی ہے۔
علامہ ساجد نقوی کے مطابق امام ششم حضرت امام جعفر صادق ؑ نے اپنے آباءو اجداد کی سنت و سیرت کو زندہ کرتے ہوئے تشنگان علوم کو بہرہ مند کیا یہی وجہ کہ امام جعفر صادق ؑکے دروس میں ہزاروں شاگردان شریک ہوتے ان سے کسب فیض کرنے والوں میں تمام مسلمہ اسلامی مکاتب فکر کے ائمہ، جید علماءکرام ،نامور سائنس دان ،اطباءاورمعروف علمی شخصیات شامل ہیں‘ ان کے فرامین کے مطابق ”ایمان عمل کے بغیر‘ عمل یقین کے بغیر اور یقین خشوع کے بغیر نہیں ہے “ ۔ ”علم بے عمل آزار ہے اور عمل بغیر اخلاص بیکار ہے “
علامہ ساجد نقوی کا مزید کہنا ہے کہ اولادپیغمبر اکرم میں سے امام جعفر صادق ؑنے جس طرح اپنے جد امجدؑ کی سیرت و کردار پر عمل پیرا ہوکر تمام شعبوں میں امت مسلمہ کی رہبری و رہنمائی کی وہ تاریخ اسلام کا ایک روشن باب ہے لہٰذ ا امت واحدہ کےلئے قرآنی تصور کو عملی طور پر اجاگر کرنے کےلئے تعلیمات قرآن‘ سیرت رسول اکرم اورکردار امام جعفر صادق ؑسے ہمیں یہ درس ملتا ہے کہ ہم فرقہ وارانہ اورمسلکی ہم آہنگی کے فروغ‘ مشترکات پر عمل درآمد‘ احترام آدمیت‘ شرف انسانیت‘ رواداری‘ برداشت اور مقدسات کے احترام سے استعماری سازشوں کو ناکام بنانے میں اپنا کردار ادا کریں ۔