• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر 10ارب سے تجاوز ہونے کے باوجو دبھی موجودہ جمہوری حکومت عوام کو روز مرہ کی اشیاء کی قیمتیں کنٹرول کرنے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے عارف حسین واحدی

جعفریہ پریس شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے کہا ہے کہ پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر 10ارب سے تجاوز ہونے کے باوجو دبھی موجودہ جمہوری حکومت عوام کو روز مرہ کی اشیاء کی قیمتیں کنٹرول کرنے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے ۔مہنگائی نے غریب عوام کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے غریب عوام جسے عام مارکیٹ کی نسبت یوٹیلیٹی سٹور پر جو تھوڑا سا ریلیف ملتا تھا حکومت نے غریب عوام سے وہ سہولت بھی چھین لی اور چینی ،آٹا و دیگر سامان کی قیمتوں میں اضافہ کرکے عوام کی مشکلات میں اضافہ کردیا ۔اور دوسری جانب پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں کمی کے باوجود ٹرانسپورٹروں کی جانب سے کرایہ جات میں کوئی کمی نہیں کی گئی اور ٹرانسپورٹر عوام سے اپنی مرضی سے زائد کرائے وصول کر رہے ہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ۔حکومت غریب عوام اور صارفین کو سہولیات فراہم کرنے میں یکسر ناکام نظر آتی ہے ،موجودہ حکومت کی پالیسیوں سے امیر کی دولت میں روز بروز اضافہ اور غریب عوام روز بروز غریب ہوتا جارہا ہے اور ملک میں بڑھتی ہوئی بے روز گاری اور مہنگائی نے عوام کا جینا محال کردیا ہے ۔
شیعہ علماء کونسل کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عارف حسین واحدی نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت نے عوام کو ریلیف دینے کی بجائے ان کی مشکلات میں مزید اضافہ کر دیا ہے اور تمام ٹیکسوں کا بوجھ بھی غریب عوام اور ملازم پیشہ طبقہ برداشت کر رہی ہے حتیٰ کہ بجلی ،سوئی گیس ،پانی کے بلوں میں اتنا اضافہ ہوچکا ہے کہ عوام کو بنیادی سہولیات کا حصول اور روز مرہ ضروریات زندگی ان کی قوت خرید سے باہر ہوتی جارہیں ، حقائق یہ ہیں اس مہنگائی کے دور میں عوام یوٹیلیٹی بل ادا کرئے یا بچوں کی تعلیم ،صحت ،و دیگر اخراجات پورے کرے اوردوسری جانب حکومت کے بلند و بالادعوے او وزیرخزانہ کی جانب سے بجٹ میں تنخواہوں اور پنشن میں اضافہ نہ کرنے کا اعلان حکمرانوں کی نااہلی اور دوہری پالیسی کی دلیل ہے ۔حکومتی ایوانوں میں بیٹھے ہوئے حکمرانوں نے عوام کو مسائل اور مہنگائی کے دلدل میں دھکیل کر خود عیش و عشرت کی زندگی گذار رہے ہیں اور عوام مہنگائی کی چکی میں پسی عوام کا جینا مشکل ہو چکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی کو کنٹرول کرتے ہوئے ر روز مرہ اشیاء سمیت بجلی و پٹرول کی قیمتوں میں بھی کمی کی جائے۔