جی بی عوام کو مکمل حقوق دیئے جائیں، علامہ ساجد نقوی قائد ملت جعفریہ پاکستان

جی بی عوام کو مکمل حقوق دیئے جائیں، علامہ ساجد نقوی قائد ملت جعفریہ پاکستان

 

یکم نومبر 1947ءکوگلگت کی غیور عوام نے ڈوگرہ راج کے خلاف علم بغاوت بلند کرکے خطے کو آزاد کرایا تھا ، قائد ملت جعفریہ
گلگت بلتستان کو مکمل حقوق دینے سے پاکستان کا موقف کمزور نہیں بلکہ زیادہ مضبوط ہو گا، عوامی اُمنگوںکے مطابق تاریخی فیصلے وقت کی ضرورت ہے
راولپنڈی/اسلام آباد 1نومبر 2021ء (نامہ نگار )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے یکم نومبر 1947ءکے تاریخی دن کی اہمیت و مناسبت کے موقع پر کہا کہ جی بی عوام کومکمل حقوق دیئے جائیں ، گلگت کی غیور عوام نے ڈوگرہ راج کے خلاف علم بغاوت بلند کرکے خطے کو آزاد کرایا تھااور گلگت کی غیور عوام نے یکم نومبر 1947ءانقلاب کی کامیابی ڈوگرہ فوج کی تاریخی شکست اور علاقہ آزاد کر انے کے بعد میر آف ہنزہ و میر آف نگر کے الحاق نامے پر 1نومبر 1947ءکو گلگت میں عبوری ،اسلا می جمہوریہ گلگت کا قیام عمل میں لایا۔ علامہ ساجد نقوی نے کہاکہ یہ گلگت کی قدیم و جدید تاریخ میں بہت بڑا سیاسی اقدام تھا اور اس اقدام کی بابت خودحکومت پاکستان نے تسلیم کرتے ہوئے اقوام متحدہ سیکورٹی کونسل کو خط لکھا تھا جو ریکارڈپر موجود ہے کہ ڈوگرہ /انڈین حکومت کا تختہ الٹ دیا گیا اور گلگت میں ایک فعال ایمر جنسی انتظامیہ قائم کی گئی ہے جس نے استور و گریزکے علاقے فتح کئے اور اپنا خزانہ و لاجسٹک کو ٹھیک کیا اور اس سپاہ کے روندو پر قبضے کے بعد بلتستان کی طرف سے اس مﺅثر گلگت انتظامیہ کا دائر ہ کار بڑھا۔یہ حکومت یا انتظامیہ کچھ خصوصیات رکھتی تھی ۔اول یہ کہ یہ عبوری تھی کیونکہ مقصد پوری ریاست کو آزاد کر اکر اس کا الحاق پاکستان سے کرناتھا ۔علامہ ساجد نقوی کا مزید کہنا تھاکہ گلگت کے عوام نے بے سروسامانی کے عالم میں آزادی کی جنگ لڑی گئی اور دس مہینہ تک جاری رہنے والی اس جنگ کے مجاہدین اگرچہ ہاتھوں میں تھامنے والا اسلحہ سے خالی تھے مگر ایمانی طاقت اور قومی یکجہتی کا حوصلہ تھا جس نے تراکبل تک دشمن کی مسلح فوج کو دھکیل دیا اور یوں تراکبل تک گلگت اسکاوٹس کا مفتوحہ علاقہ تھا ۔راجہ شا ہ رئیس خان گلگت کے پہلے صدر بنے پندرہ دن تک آزاد ریاست رہنے کے بعد خطے کے عوام نے پاکستان کےساتھ الحاق کیا ۔علامہ ساجد نقوی کا آخر میں کہنا تھا کہ ملکی و بین الاقوامی تناظر میں گلگت کی عوامی خواہشات کو مدنظر رکھتے ہوئے تاریخی فیصلے وقت کی ضرورت ہے ۔موجودہ گلگت بلتستان کو آئینی حقوق دئےے جانے سے پاکستان کا موقف کمزور نہیں بلکہ زیادہ مضبوط ہو گالہذا گلگت بلتستان کی عوام کو ان کے آئینی حقوق دئیے جائیں اور ہم گلگت کی آزدی میں شامل شہدا اور غازیوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں ۔