• تعلیم یافتہ نسل ، ملک و قوم کی ترقی کی ضمانت ہے، علامہ ڈاکٹر شبیرحسن میثمی
  • کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت

تازه خبریں

قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی اور دیگرعلماء کی طرف سے فقہ جعفریہ کے مطابق زکوۃ فطرہ کی مقدار احتیاط کے طور پر110روپے ادا کی جائے

جعفریہ پریس ۔  راولپنڈی/اسلام آ باد کے علمائے امامیہ اور مدارس کے پرنسپلز علامہ محمد حسن جعفری،علامہ سید حسن رضا نقوی،علامہ سید مشتاق حسین ہمدانی، علامہ سید عبدالجلیل نقوی،،علامہ سید فرحت عباس ہمدارنی، مولانا سید وقار حسین زیدی، سید سجاد حسین ہمدانی،مولانا فرحت عباس جوادی، مولانامحمد نذیر ناصری، مولانا امیر حسین جعفری،مولانا غلام قاسم جعفری ،مولاناسید وزیر حسین کاظمی، مولاناظفر عباس شہانی، مولانا حیدر نواز خان اور دیگر نے باہمی مشاورت اور نمائندہ ولی فقیہ قائد ملت جعفریہ حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی تائید و حمایت کے ساتھ اپنے مشترکہ بیان میں عوام کو آگاہ کیا ہے کہ اس سال بھی عید الفطر کے موقع پر فقہ جعفریہ کے مطابق زکوۃ فطرہ کا معیار گندم کو قرار دیا گیا ہے تین کلو گندم یا اس کی قیمت جو تقربیاً یہاں 105 روپے بنتی ہے لہذا احتیاط کے طور پر 110 روپے بطور زکوۃ فطرہ ادا کی جائے تاہم دیگر علاقوں میں گندم کی جو قیمت رائج ہو اس کے مطابق زکوۃ فطرہ کی ادائیگی کی جائے۔
شرعی اعتبار سے خاندان کے سربراہ پر واجب ہے کہ وہ اپنے زیر کفالت افراد حتی کہ شیرخوار بچوں، بوڑھوں اور چاند رات کو چاند دیکھنے سے قبل گھر میں موجود مہمانوں کا فطرہ ادا کریں فطرہ کے بہترین مستحق اپنے خاندان کے مستحق افراد، عام مفلس ،نادار افراد اور دینی و تبلیغی ادارے ہیں۔