جمعۃ الوداع کے موقع پریوم القدس کی ریلیاں اتحاد و وحدت کا مظہر ہوں گی، علامہ ساجد نقوی
کشمیر اور فلسطین کا مسئلہ حل کیے بغیر دنیا میں امن قائم نہیں ہو سکتا، لیاقت بلوچ
اسلام آباد ( ) ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے زیر اہتمام ’’یوم آزادی پاکستان و یوم القدس قومی سیمینار ‘‘ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے سینئر نائب صدر اور اسلامی تحریک پاکستان کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی کی زیر صدارت مقامی ہوٹل اسلام آباد میں منعقد ہوا ، جس میں ملی یکجہتی کونسل کی مرکزی قائدین نے شرکت کی۔اس موقع پر ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے سینئر نائب صدر اور اسلامی تحریک پاکستان کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قیام پاکستان کے اہداف و مقاصد کو جب تک حاصل نہ کرلیا جائے اس وقت تک وطن عزیز داخلی طور پر مستحکم اور مضبوط نہیں ہوسکتا ۔کشمیر اور فلسطین کے مسئلے پر بھی پاکستان اس وقت کردار ادا کرسکتا ہے جب پاکستان داخلی طور پرقوی ہوگا، ہمیں اتحاد کے فروغ کا عہد کرنا ہے، انہوں نے کہا کہ آج کا دن تجدید عہد کا دن ہے اورجمعۃ الوداع کے موقع پریوم القدس کی ریلیاں اتحاد و وحدت کا مظہر ہوں گی۔انھوں نے کہا کہ لائق تحسین ہیں ملی یکجہتی کونسل کے قائدین جنھوں نے آج کے سیمینار کا اہتمام کیا ۔
سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ملی یکجہتی کونسل اور جماعت اسلامی سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہا کہ ہمارا واضح موقف ہے کہ جب تک مسئلہ کشمیر اور فلسطین حل نہیں ہو جاتے تب تک دنیا میں امن قائم نہیں ہوسکتا ۔انہوں نے کہا کہ پروفیسر حافظ سعید کی نظر بندی کو ختم کیا جائے، انہوں نے کہا کہ کشمیر و فلسطین کے مسئلے کے حل کے لیے عالم اسلام نے سنجیدگی کا مظاہر نہیں کیا گیا، ایران و عراق، کویت، یمن اور شام میں تصادم پیدا کیا گیا ،پاکستان بھی تمام استعماری قوتوں کا ہدف ہے۔ عرب و عجم اور شیعہ و سنی کو آپس میں لڑایا جارہا ہے۔اسرائیل کی سرپرستی اور اسے تحفظ دینے کے لیے ہر حربہ استعمال کیا جارہا ہے ۔لیاقت بلوچ نے مزید کہا کہ ایران ، ترکی، سعودی عرب اور پاکستان اگر ایک صفحے پر آجائیں تو استعمار کو شکست دی جاسکتی ہے، اگر ایسا نہ ہوا تو عالم اسلام مزیدمسائل کا شکار ہوجائے گا۔پاکستان ایک ایٹمی طاقت ہے اور سی پیک کا منصوبہ پاکستان کے مستقبل کا اہم منصوبہ ہے اسے پایہ تکمیل تک پہنچنا چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ بھارت کشمیر میں مظالم کی انتہا کررہا ہے ۔
سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین نے کہا کہ قرآن کہتا ہے کہ یہود و نصریٰ کے پاس جاؤ گے تو ان جیسے ہوجاؤ گے، امام خمینی نے خطے میں ان چار ستونوں میں سے ایک ستون کو گرادیا جو استعماری مقاصد کے آلہ کار تھے، انہوں نے تہران میں اسرائیل کا سفارت خانہ ختم کرکے اسکی عمارت فلسطین کے حوالے کردی۔ انہوں نے مزید کہا کہ آخری جمعے کو قدس کی آزادی کے لیے باہر نکلیں،عالم اسلام کا یہ حال ہے کہ مختلف عرب ملکوں کی جنگیں اسرائیل کے ساتھ ہوئی ہیں کسی نے آج تک اسرائیل کو نشانہ نہیں بنایا۔ حماس اور فلسطین کے عوام کے سوا کسی نے اسرائیل پر حملہ نہیں کیا، جو امریکیوں کے ساتھ اٹھیں بیٹھیں گے اور رقص کریں گے وہ کبھی فلسطین کو آزاد نہیں کروا سکتے۔ آج امریکہ شکست کھا رہا ہے۔41ممالک کا اتحاد امریکہ و اسرائیل کو بچا رہا ہے،ہم کسی ایسے الائنس کا حصہ نہیں بنیں گے جو امریکی مقاصد کو پورا کرے۔ ملی یکجہتی کونسل مبارک باد کی مستحق ہے، جس کے تحت قبلہ اول کی آزادی کے لیے پاکستان کے تمام مسلمان اکٹھے ہیں۔سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے جمیعت علمائے اسلام (سینئر)کے امیر پیر عبدالرحیم نقشبندی نے کہا کہ رہونگیا میں بھی مسلمان ظلم کا شکار ہیں، آج ہم اکٹھے ہو کر سر پر کفن باندھ کر نکلیں تو فلسطین اور کشمیر آزآد ہوسکتے ہیں۔وہ دن دور نہیں جب کامیابی ہمیں نصیب ہوگی، ہم اپنے مشن کو جاری رکھیں۔ملی یکجہتی کونسل کے سیکرٹری جنرل ثاقب اکبر نے کہا کہ پاکستان اسلام کے نام پر بنایا گیا تھا اور پاکستان کی یہ ذمہ داری بنتی ہے کہ امت کو جوڑنے کا کام کرے۔ ۔پوری دنیا میں قبلہ اول کی آزادی کے حوالے سے سیمینار، کانفرنسیں منعقد ہو رہی ہیں ۔اسی سلسلے میں اسلام آباد میں ملی یکجہتی کونسل پاکستان نے یوم القدس کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد کیا اور کل بروز جمعہ اتحاد امت کا عظیم الشان مظاہرہ یوم القدس کی ریلی کی صورت میں کیا جائے گا۔ ملی یکجہتی کونسل کے نائب صدر اور امت واحدہ کے چیرمین علامہ امین شہید ی نے کہا کہ اللہ نے ہمیں توفیق دی ہے کہ آج ہم سب مکاتب فکر کے علماء و افراد ، مسلمان کی حیثیت سے امت مسلمہ کے لیے جمع ہیں، یہی ہماری کامیابی ہے۔جماعت اسلامی کے نائب امیر میاں محمد اسلم نے کہا کہ ہم نے آپس میں لڑنا ہے یا آپس میں بھائی چارہ رکھنا ہے۔مسلمان ممالک میں ہر طرف لاشیں ہی لاشیں ہیں ایسے میں علی المرتضی اور عمر فاروق جیسی قیادت کی اشد ضرورت ہے۔ اسلامی تحریک پاکستان کے سیکرٹری جنرل علامہ عارف واحدی نے کہا کہ پاکستان جن مقاصد کے لیے بنایا گیا تھا کیا وہ حاصل ہوئے ہیں۔ ہمیں اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کرنا ہوگا، اسرائیل کے مقابلے میں جو اتحاد ہے ان قوتوں کو کمزور کیا جارہا ہے، لبنان و حماس ایک مضبوط محاذ تھا جن کے درمیان اختلافات پیدا کیے جارہے ہیں۔
ان کے علاوہ یوم آزادی پاکستان و یوم القدس قومی سیمینار سے کوٹ مٹھن شریف کے سجادہ نشین پیر معین الدین محبوب کوریجہ، جماعت اسلامی کے مرکزی راہنما آصف لقمان قاضی،علامہ مقصود احمد سلفی چیف آرگنائزر متحدہ جمیعت اہلحدیث،عبدالرشید ترابی امیر جماعت اسلامی (آزاد کشمیر)،پیر غلام رسول اویسی سربراہ تحریک اویسیہ، عوامی تحریک کے راہنما قاضی محمد شفیق، تحریک جوانان پاکستان کے صدر عبداللہ گل، جمعیت اتحاد العلماء کے سینئر نائب صدر علامہ عبدالجلیل نقشبندی،راولپنڈی اسلام آباد کے یونین آف جنرنلسٹ کے جنرل سیکرٹری علی رضا علوی، امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے عباس علی، جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے حسن عباس نے بھی خطاب کیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here