• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

سانحہ عاشورہ محرم الحرام پر بیان بازی کی بجائے اگر ملزمان کو گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دی جاتی تو آج راولپنڈی بم دھماکہ نہ ہوتا۔عبداللہ رضا،مرکزی سینئیر نائب صدر جے ایس او پاکستان

جعفریہ پریس ۔ جے ایس او پاکستان کے کے مرکزی سینئر نائب صدر عبداللہ رضا نے راولپنڈی بم دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ملک عزیز اس وقت دہشت گردوں کے نشانے پر ہے ۔عاشورہ محرم الحرام کو راولپنڈی سے اٹھنے والی اس لہر نے آج پورے ملک کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہوا ہے اور حکومت نے دہشت گردوں کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ اگر سانحہ عاشورہ محرم الحرام پر بیان بازی کی بجائے فوری ایکشن لیتے ہوئے اس کے حقیقی ملزمان کو گرفتار کیا جاتا تو اس لہر کو وہیں روکا جا سکتا تھا۔ لیکن محسوس یوں ہوتا ہے کہ حکومت اس معاملے میں بالکل سنجیدہ ہی نہیں ہے ۔یا یوں کہوں تو شاید غلط نہ ہو کہ حکومت چاہتی ہے کہ پاکستان میں امن و امان ختم ہو جائے اور انارکی پھیلے۔
عبداللہ رضا نے مزید کہا کہ راولپنڈی سانحہ عاشورہ کے بعد تسلسل سے پورے ملک میں دہشت گردی کے واقعات کیے گئے۔کبھی ملتان تو کبھی بہاولپور،کراچی سے لے کر لاہور تک دہشت گردی کا خونی کھیل کھیلا گیا اور پاکستانی مسلمانوں کو آپس میں لڑانے کی سازش کی گئی۔ لیکن وہ اس سازش میں تاحال کامیاب نہیں ہو سکے۔اس کی وجہ یہ ہے کہ تمام پاکستانی جانتے ہیں کہ یہ کوئی شیعہ سنی کا مسئلہ نہیں بلکہ یہ ایک تیسری طاقت ہے کہ جو ان تمام سانحات کے پیچھے کارفرما ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ آج پاکستان میں دہشت گردوں کی حکومت ہے اور وہ جدھر چاہتے ہیں اور جو چاہتے ہیں کر گزرتے ہیں ۔پاکستان میں حکومتی سطح پر کسی ادارے میں اس قدر جرائت نہیں کہ وہ ان کے ہاتھوں کو روک سکے۔ہم راولپنڈی بم دھماکے کی پر زور مذمت کرتے ہیں اور حکومت وقت کو آگاہ کرتے ہیں کہ اگر ان سانحات کو نہ روکا گیا تو وہ وقت دور نہیں کہ جب حکومتی ارکان سڑک پر جوتے گھسیٹتے ہوئے نظر آئیں گے۔