• حساس نوعیت کے فیصلے پر سپریم کورٹ مزیدوضاحت جاری کرے ترجمان قائد ملت جعفریہ پاکستان
  • علامہ شبیر میثمی کی زیر صدارت یوم القد س کے انعقاد بارے مشاورتی اجلاس منعقد
  • برسی شہدائے سیہون شریف کا چھٹا اجتماع ہزاروں افراد شریک
  • اعلامیہ اسلامی تحریک پاکستان برائے عام انتخابات 2024
  • ھیئت آئمہ مساجد و علمائے امامیہ پاکستان کی جانب سے مجلس ترحیم
  • اسلامی تحریک پاکستان کے سیاسی سیل کا اجلاس اسلام آباد میں منعقد ہوا
  • مولانا امداد گھلو شیعہ علماء کونسل پاکستان جنوبی پنجاب کے صدر منتخب
  • اسلامی تحریک پاکستان کے زیر اہتمام فلسطین و کشمیر کانفرنس
  • ملک کا امن شرپسندوں اور دہشتگردوں کے خاتمے میں مضمر ہے، علامہ شبیرمیثمی
  • اسلامی تحریک پاکستان کا ویڈیو لنک اجلاس اہم فیصلہ جات

تازه خبریں

عقیدت وعقائد پرمبنی قصائد کواس قسم کے مارننگ پروگرام میں پیش کرنا لوگوں کے مذہبی جذبات کومجروح کرنے کے مترادف ہے، چینل کے ذمہ داران پوری قوم سے معذرت کریں

جعفریہ پریس – قائد ملت جعفریہ پاکستان حضرت آیت اللہ علامہ سید ساجد علی نقوی کے ترجمان نے کہا  ہے کہ لوگوں کی عقیدت و عقائد پر مبنی قصائد کو اس قسم کے پروگراموں میں پیش کرنا لوگوں کے مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کے مترادف ہے، مذکورہ چینل کے ذمہ داران اس جسارت پر قوم سے معذرت کریں اور یقین دہانی کرائیں کہ آئندہ ایسے پروگرامز نشر کرنے سے اجتناب کیا جائیگا جس سے عقائد پر حرف آتا ہو اور مذہبی جذبات مجروح ہوں، پیمرا بھی ایسے پروگرامز کی روک تھام کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔
گزشتہ روز نشر ہونیوالے پروگرام کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے ترجمان نے کہا کہ گزشتہ روز ایک نجی ٹی وی چینل کے مارننگ پروگرام میں ایسے الفاظ کا تذکرہ کیا گیا اور اس میں کچھ لوگوں کو بٹھا کر خالصتاً مذہبی عقیدت و عقائد پر مشتمل قصائد اس انداز میں پیش کئے گئے جس سے لوگوں کے عقیدے اور مذہبی جذبات کو شدید ٹھیس پہنچی ہے، پورے ملک میں غم و غصے کی ایک لہر دوڑ گئی اور اسی پروگرام کے باعث لوگوں کے جذبات مجروح ہوئے۔ آزادی اظہار رائے پر کوئی پابندی نہیں لیکن مذکورہ بالا پروگرام کا اظہار رائے سے کوئی تعلق نہیں اس طرح کے پروگرام نشر کرنے سے پہلے بعض وجوہ کا جائزہ لینا ضروری ہے۔
ترجمان نے مطالبہ کیا کہ اس جسارت پر مذکورہ بالا چینل کے ذمہ داران پوری قوم سے معذرت کریں اور معاملے کے ذمہ داران کو چاہیے کہ وہ سنجیدگی کا مظاہرہ کریں اور وضاحت کے ساتھ یقین دہانی کرائیں کہ آئندہ کبھی ایسا کوئی پروگرام نشر نہیں کیا جائیگا۔ ترجمان نے مزید کہا کہ پیمرا کو بھی چاہیے کہ ایسے پروگراموں کی سختی سے مانیٹرنگ کیا کریں اور اس کے تدارک کیلئے فوری اقدامات اٹھائے جائیں۔