• مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس
  • اپنے تنظیمی نظام اور سسٹم کو مضبوط سے مضبوط کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ ورکر کنونشن
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات علمی حلقوں میں خلا مشکل سے پُر ہوگا علامہ شبیر میثمی

تازه خبریں

پولیس افسرحیدر علی اور سید علی رضا زیدی کے سفاک قاتلوں کو فوری گرفتار کیا جائے‘علامہ رمضان توقیر

پشاور( ) شیعہ علماء کونسل پاکستان صوبہ خیبر پختونخواہ کے صدر اور سابق صوبائی مشیر علامہ محمد رمضان توقیر نے پشاور میں پچھلے ہفتے آئی جی جیل خانہ جات کے پی اے حیدر علی اور گذشتہ روز حیات آباد میں نیشنل بنک آفیسر سید علی رضا زیدی کو اپنے گھر کے دروازے پر بہیمانہ طریقے سے شہید کرنے کے واقعات میں ملوث انسانیت دشمن عناصر کو فی الفوربے نقاب کر کے کیفرکردار تک پہنچانے کا مطالبہ کیا ہے اور پشاور ہونے والی ٹارگٹ کلنگ کی پرزور مذمت کرتے ہوئے انتظامیہ سے سخت ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔اِس سلسلے میں علامہ محمد رمضان توقیر دونوں شہداء کے گھر گئے اور اُن کے پسماندگان سے تعزیت کی۔ اِس موقعہ پر شیعہ علما کونسل خیبر پختونخواء کے ممبر صوبائی جنرل کونسل افتخار علی بنگش‘ ضلعی صدر آخونزادہ مجا ہد علی اکبر‘ یونٹ صدر افتخار علی میراور جعفریہ یوتھ کے کنوینیئر جعفر رضا بھر اُن کے ہمراء موجود تھے۔ ٹارگٹ کلنگ کے ان واقعات پر اپنے ردعمل کااظہار کرتے ہوئے علامہ محمد رمضان توقیر نے کہا کہ حکومت کی اولین ذمہ داری ہے کہ وہ ملک کی عوام کے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنائے اُُنہوں نے کہا کہ ملک میں شیعہ ٹارگٹ کلنگ کے آئے روز بڑھتے ہوئے واقعات اس امر کے غماز ہیں کہ حکومت عوام کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہو چکی ہے اوران حالات میں عوام میں بڑھتا ہوا عدم تحفظ کا احساس اُنکو اپنا تحفظ خود کرنے پر مجبور کر رہا ہے اور اگر حکومت نے دہشت گردی کے ان واقعات کا فوری تدارک ممکن نہ بنایااور ان واقعات میں ملوث ملک دشمن عناصر کے خلاف کاروائی عمل میں لاتے ہوئے اُنکو کیفرکردارتک نہ پہنچایا تو ملک خانہ جنگی کی صورتحال حال سے دوچار ہو سکتا ہے جو وطن عزیز پاکستان کو اندورنی خلفشار کا شکار کر کے کمزور کرنے کے ملک دشمن عناصر کے مذموم عزائم کو تقویت دے سکتا ہے ۔ اُنہوں نے صوبائی حکومت سے شہداء کے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا بھی مطالبہ کیا۔