• تعلیم یافتہ نسل ، ملک و قوم کی ترقی کی ضمانت ہے، علامہ ڈاکٹر شبیرحسن میثمی
  • کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت

تازه خبریں

ہم ہزاروں جانیں تو قربان کرسکتے ہیں لیکن مقدس مقامات کی زیارت پر جانے سے نہیں رک سکتے، علامہ محمد رمضان توقیر

جعفریہ پریس-  کوئٹہ میں ایران سے آنے والی ڈیرہ اسماعیل خان و دیگر زائرین کی بس پر خود کش حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے شیعہ علماء کونسل خیبر پختونخوا کے صوبائی صدر علامہ محمد رمضان توقیر نے جانی و مالی نقصان پر دلی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے قائد ملت جعفریہ علامہ ساجدعلی نقوی کے حکم پرملک بھر کی طرح خیبر پختونخوا میں بھی 3 روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے۔
علامہ رمضان توقیر نے کہا کہ پورا ملک دہشت گردی کی آگ میں جل رہا ہےاور خصوصاً بلوچستان میں ایران سے آنے والے زائرین کی بسوں پرحملے معمول بن چکے ہیں جو دو برادر ملکوں کے درمیان حالات خراب کرنے کی سازش  اور زائرین کو ایران میں مقدس مقامات کی زیارت پر جانے سے روکنے کی ناکام کوشش ہے جو کبھی پوری نہیں ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم ہزاروں جانیں تو قربان کرسکتے ہیں لیکن مقدس مقامات کی زیارت پر جانے سے نہیں رک سکتے۔
علامہ محمد رمضان توقیر نے کہا کہ دہشت گردی کے یہ واقع قرآنی تعلیمات کی مخالفت کرتے ہوئے ملک میں سزائے موت کے قانون کو ختم کرنے کا نتیجہ ہے کہ دہشت گرد بے خوف وخطر ایسی کاروائیاں کرتے ہیں۔ انہوں نے حکومت پاکستان اور بالخصوص حکومت بلوچستان سے مطالبہ کیا کہ دہشت گرد قاتلوں کو پکڑ کر فوری کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ اور ایران جانے والے زائرین کی بسوں کو مکمل فل پروف سیکورٹی فراہم کی جائے۔