• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

ایٹمی ہتھیار کی بنیاد ہی بد نیتی و سفاکیت پر مبنی ہے قائد ملت جعفریہ پاکستان

ایٹمی ہتھیار کی بنیاد ہی بد نیتی و سفاکیت پر مبنی ہے ، قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ ساجد نقوی
ایسا کوئی بھی ایٹمی ہتھیار جو انسانیت اور کرئہ ارض کےلئے تباہ کن ہو اسکا کوئی جواز نہیں، قائد ملت جعفریہ پاکستان
ایٹمی ہتھیاروں کی دوڑ نے انسانیت کےلئے ایسا خطرہ پیدا کردیا جو ہمیشہ کرئہ ارض پر منڈلاتا رہےگا، عالمی یوم پر پیغام
راولپنڈی /اسلام آباد 29 اگست 2022ء ( جعفریہ پریس پاکستان )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کہتے ہیں ایسا کوئی بھی ہتھیار جو انسانیت اور کرئہ ارض کےلئے تباہ کن ہو اسکا کوئی سیاسی، سماجی، اقتصادی ، دفاعی، دینی یا اخلاقی جواز نہیں، ایٹمی ہتھیار انسانیت اور قدرتی عوامل کی مخالفت ہے، ایٹم کو بطور ہتھیار استعمال کی شروعات نے انسانیت کےلئے ایسا خطرہ پیدا کردیا جو ہمیشہ کرئہ ارض پر منڈلاتا رہے گا۔ایٹمی ہتھیار کی بنیاد ہی بد نیتی و سفاکیت پر مبنی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے ایٹمی ہتھیاروں کے پھیلاﺅ اور انسداد ایٹمی تجربات سے متعلق عالمی یوم پر اپنے پیغام میں کیا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجدعلی نقوی نے کہاکہ ایسا کوئی بھی ہتھیار جو انسانیت اور کرئہ ارض کےلئے تباہ کن اس کا کوئی سیاسی، سماجی، اقتصادی، دفاعی یا اخلاقی جواز نہیں البتہ ایک کے بعد دوسرے ملک نے دفاعی میدان میں مقابلے کی غرض سے ان ایٹمی ہتھیاروں کے ذریعے اپنی دھاک بٹھانے کی نہ صرف کوشش کی گئی بلکہ ہیروشیماناگاساکی پر یہ بم برسا کرزمین کے اس خطے سے ہمیشہ کےلئے زندگی کو نہ صرف ختم کردیاگیا بلکہ آج بھی اس کے اثرات اس خطے اور ا س سے جڑے علاقوں میں محسوس کئے جارہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ ایٹمی ہتھیار انسانیت اور قدرتی اصولوں کی مخالفت ہے اور ایسے ہتھیار جس سے انسانیت نا پیدہونے کے خطرات ہوں ان کا کوئی جواز نہیں ہے۔ انہوںنے مزید کہاکہ دنیا میں سنجیدہ فکر شخصیات اور اداروں نے ہمیشہ ان ہتھیاروں کے پھیلاﺅ کی روک تھام کےلئے نہ صرف آواز اٹھائی بلکہ ان ہتھیاروں کے تجربات کرنے سے جو نقصانات فضا اور خطوں میں ہوتے ہیں اور اس کے انسانی صحت پر مضر اثرات بارے بھی آگاہی فراہم کرتے چلے آرہے ہیں۔ ایٹمی ہتھیاروں کی دوڑ نے دنیا میں ایسا خطرہ پیدا کردیاہے جو اب شائد ہمیشہ کےلئے کرئہ ارض پر منڈلاتا رہے گا۔ آخر میں انہوںنے کہا کہ ایٹمی پروگرام پُر امن اور اانسانی مفاد کیلئے ہونا چاہیے ۔