• عزاداری کیخلاف کسی قسم کی رکاوٹ یا محدودیت قبول نہیں کریں گے ،مرکزی نائب صدر شیعہ علماءکونسل
  • پاکستانی زائرین کیلئے عراق بارڈر کھولنا احسن اقدام ہےشیعہ علماء کونسل پاکستان
  • بلند پہاڑی( کے ٹو ) کے کوہ پیما واجد اللہ نگری کا قائد ملت جعفریہ پاکستان کا شکریہ
  • جی ایم شاہ کے فرزند کی دستار بندی قائد ملت جعفریہ پاکستان کے فرزندان نے قل خوانی میں شرکت کی
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی ہدایت پر علامہ ناظر عباس تقوی سیلاب متاثرین کے درمیان
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی ہدایت پر نوجوان بھی سیلاب متاثرین کی مدد میں پیش پیش
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی ہدایت و سرپرستی میں زہرا اکیڈمی کا ملک بھر میں فلڈ آپریشن جاری
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کے رفیق و سابق محافظ سید جی ایم شاہ انتقال کرگئے
  • ملک بھر میں سیلاب متاثرین کی امداد کا سلسلہ جاری کارکنان امدادی سرگرمیوں میں بھرپور حصہ لیں
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی اپیل پر ملک بھر میں سیلاب متاثرین کی امداد جاری

تازه خبریں

آئمہ جمعہ نے خطبات میں آواز اُٹھائی ، توہین کےخلاف قراردادیں منظور کیںاور بھر پور احتجاج کیا گیا

قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقو ی کی ا پیل پر بھارت میں توہین آمیز ریمارکس پر ملک گیر احتجاج

قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقو ی کی ا پیل پر بھارت میں توہین آمیز ریمارکس پر ملک گیر احتجاج
 
آئمہ جمعہ نے خطبات میں آواز اُٹھائی ، توہین کےخلاف قراردادیں منظور کیںاور بھر پور احتجاج کیا گیا
 
اوآئی سی اور مسلم ممالک پیغمبر اسلام اور شعار اسلام کی توہین کےخلاف ایسا لائحہ عمل تیار کریں کہ کسی شیطانی قوت کو آئندہ گستاخی کرنے کی جرات نہ ہو، مقررین
 
راولپنڈی/ اسلام آباد10 جون 2022 ء(جعفریہ پریس پاکستان  )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کی ہدایت پر بھارت میں توہین آمیز ریمارکس کیخلاف کراچی سے خیبر اور گوادر سے گلگت بلتستان تک ملک بھر کے تمام بڑے چھوٹے شہروں میں آئمہ جمعہ نے خطبات میں آواز اٹھائی اوربعد از نماز جمعہ ملک گیر احتجاج کیا گیا ۔قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے بھارت میں پیغمبر اکرم اور شعائر اسلام کے حوالے سے دیئے گئے ریمارکس کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے پڑوسی ملک میں پیغمبر اسلام اور شعائر اسلام کی بڑھتی بے حرمتی کوانتہائی قابل مذمت و قابل تشویش ور اسلامی ممالک کا رد عمل کو مستحسن قرار دیتے ہوئے مزید موثر اقدامات کرکے بھارتی مسلمانوں کو توہین، دباﺅ اور مظالم سے بچانے کی ضرورت پر زور دیا تھا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کی ہدایت پر ملک بھر میں یوم جمعہ یوم احتجاج کے طور پر مناتے ہوئے آئمہ جمعہ نے اپنے خطبات میں اس کےخلاف آواز اُٹھائی اور قراردادیں منظور ہوئیں اور احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں ۔اس موقع پر مقرریں نے بھارت میں سیاسی رہنماﺅں کے سیاسی مباحث کے دوران پیغمبر اسلام اور شعائر اسلا م کے خلاف دیئے گئے ریمارکس کو گستاخانہ قرار دیتے ہوئے اس کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے تشویش کا اظہار کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی مباحثہ میں بھی توہین آمیز ریمارکس سے پوری دنیا بالخصوص مسلم دنیا کے جذبات کو شدید ٹھیس پہنچائی گئی اس حوالے سے پاکستان سمیت اسلامی ممالک کی جانب سے جس طرح رد عمل آیا وہ مستحسن البتہ ان اقدامات کو مزید موثر بنانے کی ضرورت ہے تاکہ بھارت میں مقیم مسلمانوں پر دباﺅ، توہین اور مظالم کا خاتمہ کیا جاسکے۔ مقررین نے کہا کہ پیغمبر اسلام اور شعائر اسلام کے بارے ناپاک جسارت کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ، اس وقت امت مسلمہ کے دل چھلنی ہیںایسی گستاخی برداشت نہیں کی جاسکتی ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ وزیر اعظم پاکستان ،اوآئی سی اور مسلم ممالک مذمتوں سے آگے بڑھیں اورایسا لائحہ عمل تیار کریں کہ کسی شیطانی قوت کو آئندہ گستاخی کرنے کی جرات نہ ہو۔