• علامہ شبیر حسن میثمی کی اسپیکر قومی اسمبلی
    راجہ پرویز اشرف سے اسپیکر چیمبر میں ملاقات
  •  متنازعہ فوجداری ترمیمی بل کو یکسر مستردکرتے ہیں ، شیعہ علماءکونسل پاکستان
  • متنازعہ ترمیمی بل: علماء و ذاکرین مشاورتی اجلاس کل کراچی میں منعقد ہوگا
  • مقدس کتاب قرآن مجید کی بے حرمتی ی شدید مذمت کرتے ہیں سید راشد حسین نقوی
  • بزرگ علمائے تشیع نے متنازعہ ترمیمی ایکٹ کو مسترد کردیا اعلامیہ جاری
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان ضلع ملتان کا ورکر کنونشن منعقد ہوا جس میں مولانا اعجاز حسین بھشتی ضلی صدر ملتان منتخب ہوئے
  • شیعہ علماء کونسل کی زیر نگرانی متنازعہ بل کے سلسلے میں مختلف جماعتوں کا اجلاس
  • علامہ اسد اقبال زیدی کا ضلع دادو کادورہ اسلامی تحریک کے کارکنان سے ملاقات
  • توہین کے متنازعہ بل کو مسترد کرتے ہیں علامہ رمضان توقیر
  • قومی اسمبلی میں متنازعہ قانون سازی کو مسترد کرتے ہیں جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان

تازه خبریں

 قوموں اور معاشروں کی تعمیر و ترقی میںسب سے بنیادی کردار اساتذہ ہیں، قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقوی

 قوموں اور معاشروں کی تعمیر و ترقی میںسب سے بنیادی کردار اساتذہ ہیں، قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقوی
تعلیمی درس گاہوں، مدارس، مساجد کو اضافی ٹیکسز سے استثنیٰ دیا جائے، قائد ملت جعفریہ پاکستان کا پیغام
اسلام آباد05 اکتوبر 2022ء(  )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کہتے ہیںاساتذہ قوموں اور معاشروں کی تعمیر و ترقی میں نہ صرف بنیادی کردار ادا کرتے ہیں بلکہ رہنمائی کا فریضہ بھی انجام دیتے ہیں،اسلام میں اساتذہ کا احترام لازم ہے،مشرقی معاشرے کی روایات میں بھی استاد کے احترام کو غیر معمولی اہمیت حاصل ہے لیکن بدقسمی سے رائج نظام تعلیم کے شعبے بالخصوص اساتذہ کو اہمیت نہیں دی گئی، افسوس آج بھی تعلیم کے مراکز حکومتوں کی عدم توجہی کا شکار ہیں ، دنیا بھر میں تعلیمی ، فلاحی ادارے ٹیکسز سے مستثنیٰ مگر بارہامتوجہ کرنے کے باوجود رفلاحی تعلیمی اداروں کے حوالے سے اب تک کوئی اقدام نہ ہوا ، مدارس، مساجد اور تعلیمی اداروںسے کم از کم یوٹیلٹی بلز میں عائد مختلف ٹیکسز ہی ختم کئے جائیں ۔
ان خیالات کا اظہار انہوںنے عالمی یوم اساتذہ پر اپنے پیغام اور مختلف تعلیمی درس گاہوںکے منتظمین ، اساتذہ کرام، علمائے کرام کے خطوط کا جواب دیتے ہوئے کیا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ اساتذہ قوموں اور معاشروں کی تعمیر و ترقی میں نہ صرف بنیادی کردار ادا کرتے ہیں بلکہ وہ رہنمائی کا فریضہ بھی انجام دیتے ہیں، دنیا میں تما م ترقی یافتہ تہذیبوں ، معاشروں اور ریاستوں میں سب سے کلیدی کرداراساتذہ کا ہی رہا ہے جو شبانہ روز محنت کےساتھ نئی نسل کی علم کے ذریعے آبیاری کرتے ہیں ۔اساتذہ کا احترام ہر معاشرے اور مذہب میں احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتاہے البتہ اسلام کے آفاقی پیغام نے اسے غیر معمولی اہمیت نہ صرف دی ہے بلکہ مشرقی معاشرے کی روایات میں بھی اساتذہ کرام کو غیر معمولی اہمیت حاصل ہے ۔ مگر افسوس پاکستان میں آج بھی تعلیمی مراکز وفاقی و صوبائی حکومتوں اور ذمہ دار کی عدم توجہی کا شکار ہیں۔ انہوںنے کہاکہ دنیا بھر میں ٹرسٹ، فلاحی رفاحی ادارے، تعلیمی ادا رے ، مدارس و مذہبی ادارے مختلف قسم کے ٹیکسز سے مستثنیٰ اس لئے کئے جاتے ہیں تاکہ ان کی تمام تر توجہ درس و تدریس و ترویج پر رہے مگر افسوس بارہا مرتبہ متوجہ کرنے کے باوجود آج تک اس اہم ترین معاملے کی جانب سنجیدگی سے غور نہیں کیاگیا۔ انہوں نے کہاکہ فی الفور تمام ٹیکسز خصوصاً یوٹیلی بلز (پانی، بجلی اور گیس) میں فیول ایڈجسٹمنٹ سمیت دیگر سرچارجز کی مدمیں عائد کئے گئے ٹیکسز ختم اور مساجد، مدارس اور تعلیمی درس گاہوں کےلئے فلیٹ ریٹس مقرر کئے جائیں ۔ دوسری جانب قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے اساتذہ کرام، علمائے کرام اور تعلیمی درس گاہوں کے منتظمین کو متوجہ کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ ان کے مسائل کو فی الفور ارباب اختیار تک پہنچائے جائیں گے اور حتی المقدور ان مسائل کے حل کےلئے کردار ادا کیا جائےگا۔