جعفریہ پریس کراچی(اسٹاف رپورٹر)شیعہ علماء کو نسل پا کستان صوبہ سندھ کی جانب سے نمائش چورنگی پرہنگامی پر یس کانفرنس منعقد کی گی جس میں شیعہ علماء کو نسل سندھ کے صدر علامہ ناظر عباس تقوی ،علامہ شبیر حسن میثمی ،علامہ فیاض مطہری ،علامہ جعفر سبحانی،علامہ روح اللہ ،مرکزی ڈپٹی جنرل سیکر ٹری حسنین مہدی، نائب صدرسندھ یقوب شہباز سمیت دیگر علماء کرام بھی مو جود تھے پُر ہجوم ہنگامی پر یس کا نفر نس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ ناظر عباس تقوی کا کہنا تھا کہ محرم الحرام کا آغاز ہو چکا ہے پورے پا کستان میں مجلس عزاء کا سلسلہ جاری ہے مجلس عزاء ہمارا آئینی اور بنیادی حق ہے صوبائی حکومت کی جانب سے ضا بطہ اخلاق پر شد ید تحفظات ہیں ہم نے بار بار حکومت کو متنبی کیا ہے کہ ضابطہ اخلاق میں مو جود کمزوریوں کو دور کیا جائے تا کہ عزا دار آزادی کے ساتھ مجلس عزاء منعقد کر سکے وزیر اعلی کی جانب سے آج شیعہ عمائدین کا بلا یا جانے والے اجلاس میں لاوڈ اسپیکر کے حوالے سے یقین دلایا کہ ہم نے نو ٹی فیکشن جاری کر دیا ہے لہذا مجلس عزاء میں لاوڈاسپیکر پر کوئی پابندی نہیں ہوگی اس کے علاوہ خیرپور اور سکھر میں ایس ایس پی لیول پر بنے والے ضابطہ اخلاق کو ہم مسترد کر تے ہیں جس میں نئی مجلس عزاء علم پاک نصب کر نے نئے جلوس اور سبیل لگانے پر پابندی کا لکھا گیا ہے جبکہ صوبائی وزیر داخلہ کی جانب سے بنے الے ضابطہ اخلاق میں کو ئی ایسی چیز موجود نہیں ہے لہذا ڈویزن اور ضلعی سطح پر بنے والے ضابطہ اخلاق متصادم ہیں صوبائی وزیر داخلہ کے ضابطہ اخلاق سے جس پر وزیر اعلی نے بھی تعجب کا اظہار کیا اور فی الفور نوٹس لینے کا حکم دیا ہے علامہ ناظر عباس کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت کے احکامات کو ضلعی صدر کو توڑ موڑ کے پیش کیا جارہا ہے جس کی وجہ سے عزاداروں میں بے چینی پائی جاتی ہے جوکسی بھی صورت مناسب اقدام نہیں ہے ہم حکومت اور انتظامیہ کے ساتھ تعاون کی امید رکھتے ہیں اور نوٹی فیکیشن کے منتظر ہیں وزیر اعلی سندھ نے علماء اور عمائدین سے کہا ہے کہ ہم نے نوٹی فیکشن جاری کر دیا ہے لیکن تا حال ہمیں نوٹی فیکشن موصول نہیں ہوا ہے جس کی بناء پر انتظامیہ با نیان جلوس اور مجلس کو دباو دے رہی ہے کے دوران مجلس لاوڈ اسپیکر استعمال کر نے پر پابندی ہے اگر 24گھنٹے کے اندر نوٹی فیکیشن شیعہ عمائدین اور مطلاقہ عملے کو موصول نہیں ہوا تو صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے پورے سندھ میں عاشور کے جلوس روک کر احتجاج کریں گے یہ احتجاج ہمارا آئینی اور قا نونی حق ہے ہم امید کر تے ہیں کہ حکومت عزاداری کو منعقد کر نے میں ہمارے ساتھ تعاون کرے گی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here