• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

ہم مراجع کے حکم کے منتظر ہیں ، کربلا کی حفاظت کے لئے کسی رکاوٹ کو ٹکنے نہیں دیں گے۔ قائد ملت جعفریہ علامہ سید ساجد علی نقوی

جعفریہ پریس۔ قائد ملت جعفریہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے جھنگ گڑ مور پر ہزاروں افرد سےملت جعفریہ کو درپیش مسائل اور ان کےحل کے حوالے سےپالیسی ساز  خطاب  کیا۔اپنے خطاب میں حالات حاضرہ بالخصوص عراق کی موجودہ صورتحال پر گفتگو کرتے ہوئے  کہا کہ عراق میں رہنے والے آپکے بھائی اتنی قابلیت رکھتے ہیں کے اس سازش کو ناکام بنائیں،پھر بھی اگر ضرورت پڑی تو ہمارا سب کچھ حاضر ہے کربلا کی حفاظت کے لیے،مرجعیت عظمیٰ نے جو بیان دیا ہے ہم منتظر ہیں واضح ہوکہ یہ عراق کی عوام تک محدود ہے یا پوری دنیا کے لئےہے.جب بھی  مراجع بلوائینگے ہم کسی رکاوٹ کو اپنے سامنے ٹکنے نہیں دینگے،ان کا مزید کہنا تھا کہ کربلا کی حفاظت مظبوط ہاتھوں میں ہے جیسے حضرت زینب کے روضۂ کی تھی ،ہے اور رہے گی اور اس میں ہم بھی برابر کے شریک ہیں،ہم فاتح خیبر کے ماننے والے ہیں میدان میں آکر لڑتے ہیں چوروں کی طرح نہیں آتے انہوں نے جھنگ کی سیاست میں حاصل ہونے والی کامیابی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ (تکفیری)میدان میں آئے تھے آپ نے دیکھا  ٢ بار انکو شکست  کا سامنا کرنا پڑا۔ قائد محترم کی آمد سے جلسہ کے اختتام  تک جھنگ کی فضا قائد کے فرمان پر جان بھی قربان ہے کے فلک شگاف نعروں سے گونجتی رہی ادر شدید گرم موسم کے باوجود مومنین اپنے محبوب قائد کے عشق میں دیوانہ وار حاٖضر رہے۔