• عزاداری کیخلاف کسی قسم کی رکاوٹ یا محدودیت قبول نہیں کریں گے ،مرکزی نائب صدر شیعہ علماءکونسل
  • پاکستانی زائرین کیلئے عراق بارڈر کھولنا احسن اقدام ہےشیعہ علماء کونسل پاکستان
  • بلند پہاڑی( کے ٹو ) کے کوہ پیما واجد اللہ نگری کا قائد ملت جعفریہ پاکستان کا شکریہ
  • جی ایم شاہ کے فرزند کی دستار بندی قائد ملت جعفریہ پاکستان کے فرزندان نے قل خوانی میں شرکت کی
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی ہدایت پر علامہ ناظر عباس تقوی سیلاب متاثرین کے درمیان
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی ہدایت پر نوجوان بھی سیلاب متاثرین کی مدد میں پیش پیش
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی ہدایت و سرپرستی میں زہرا اکیڈمی کا ملک بھر میں فلڈ آپریشن جاری
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کے رفیق و سابق محافظ سید جی ایم شاہ انتقال کرگئے
  • ملک بھر میں سیلاب متاثرین کی امداد کا سلسلہ جاری کارکنان امدادی سرگرمیوں میں بھرپور حصہ لیں
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان کی اپیل پر ملک بھر میں سیلاب متاثرین کی امداد جاری

تازه خبریں

کورونا وائرس, وفاق اور صوبوں میں کوآرڈنیشن کا فقدان ہے

کورونا وائرس, وفاق اور صوبوں میں کوآرڈنیشن کا فقدان ہے

 کورونا وائرس, وفاق اور صوبوں میں کوآرڈنیشن کا فقدان ہے, قائد ملت جعفریہ علامہ ساجد نقوی, وفاقی حکومت نے تفتان بارڈر پر 14روز قرنطینہ کے بعد زائرین کو گھروں کو روانہ کرنے کا یقین دلایا تھا ۔, قرنطینہ میں رکھنے کے باوجود زائرین کو گھرجانے سے روکنا بد انتظامی کا نتیجہ ہے, قائد ملت جعفریہ, “راولپنڈی /اسلام آباد 15مارچ 2020ء( جعفریہ پریس)قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقو ی کہتے ہیں کہ کورونا وائرس کی وبا کی روک تھام کیلئے وفاق اور صوبوں میں کو آرڈینیشن کا فقدان نظر آرہا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ ہم ملک میں کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کیلئے ہر ممکن اقدامات و احتیاطی تدابیر پر عمل کرنے کے قائل ہیں۔احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے کورونا وائرس کے پھیلاﺅ کو روکنے کی خاطرتفتان قرنطینہ میں عدم سہولیات کے باوجود سخت سردی کا مقابلہ کرتے ہوئے جو زائرین حفاظتی مدت پوری کر نے اور24گھنٹوں کا طویل دشوار سفر طے کرنے کے بعداپنے اپنے صوبوں میں پہنچے ہیں”, اطلاعت ہیں کہ انہیں دوبارہ قرنطینہ میں رکھا جا رہا ہے جہاں سہولیات ناقص ہیں۔یہ وفاقی اور اور صوبائی حکومتوں کے درمیان عدم کو آرڈینیشن اور بد انتظامی کا شکار ہے ۔ اس عمل سے منصوبہ بندی کے تحت زائرین کو تنگ کئے جانے کا تاثرجنم لے رہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ اگر صوبائی حکومتیں تفتان قرنطینہ پر تحفظات رکھتی ہیں توزائرین کو تفتان میں کیوں رکھا جارہا ہے؟تمام زائرین کو تفتان قرنطینہ کے بعد گھروں کو روانا کیا جائے یا تمام کو انکے صوبوں میں قائم قرنطینہ میں لایا جائے تاکہ زائرین کو دو دو بار مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔آخر میں انہوںنے کہا کہ غیر منصفانہ بر تاﺅ کسی صور ت قبول نہیں, کسی بھی ناگہانی آفت کا مقابلہ تدبر اور بلند حوصلے سے کیا جاتا ہے کورونا وائرس کے نام پر خوف وہراس پھیلانے کی بجائے مثبت اندازا میں عملی اقدامات کی ضرورت ہے اور جلد از جلد زائرین کی سکریننگ اور تشخیص کے بعد تسلی ہونے پر انہیں گھروں کو روانہ کیا جائے تاکہ زائرین کی مشکلا ت کو دور کیا جاسکے ۔