• غاصب ریاست مکڑی کے جال سے بھی کمزور ہے علامہ عارف حسین واحدی
  • نوشکی قومی شاہراہ پہ مسافر بسوں پر حملہ افسوسناک ہے علامہ شبیر میثمی
  • قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ ساجد نقوی کی اپیل پر ملک بھر میں القدس ریلیوں کا انعقاد
  • قائد ملت کی اپیل پر جمعۃ الوداع یوم القدس کے عنوان سے منایا جائے گا علامہ شبیر میثمی
  • اسلام آبادپولیس کا عزاداروں پر شیلنگ،تشدد اور مقدمہ بلاجوازہے ، علامہ شبیر میثمی
  • رمضان المبارک 1445ھ کی مناسبت سے علامہ ڈاکٹر شبیر حسن میثمی کا خصوصی پیغام
  • علامہ رمضان توقیر سے علامہ آصف حسینی کی ملاقات
  • علامہ عارف حسین واحدی سے علماء کے وفد کی ملاقات
  • حساس نوعیت کے فیصلے پر سپریم کورٹ مزیدوضاحت جاری کرے ترجمان قائد ملت جعفریہ پاکستان
  • علامہ شبیر میثمی کی زیر صدارت یوم القد س کے انعقاد بارے مشاورتی اجلاس منعقد

تازه خبریں

حساس نوعیت کے فیصلے پر سپریم کورٹ مزیدوضاحت جاری کرے

فوجداری قانونی ترمیمی ایکٹ عوام میں بدامنی و انتشارکا موجب بنے گا ، ترجمان قائد ملت جعفریہ

فوجداری قانونی ترمیمی ایکٹ عوام میں بدامنی و انتشارکا موجب بنے گا ، ترجمان قائد ملت جعفریہ
سینٹ کے آخری دن میں ڈھڑا ڈھڑ بلوں کو تھوک کے حساب سے منظوری عجلت میں پاس کرنا تعصب اور فرقہ واریت کو فروغ دینے کے مترادف ہے
پاکستان میں عوام حقوق کی علمبرداروں سے اپیل کہ وہ اس بل کے خلاف ہر فورم پر آواز بلند کریں اور اس مذہبی منافرانہ و متعصبانہ بل کو مسترد کردیں ، ترجمان
عوام کو آپس میں لڑانے کی اس مذموم سازش کے خلاف ہر محب وطن شہری ترمیمی بل کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرے، ترجمان قائد ملت جعفریہ پاکستان
اسلام آباد /راولپنڈی 7 اگست 2023 ء ( جعفریہ پریس پاکستان )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی کے ترجمان نے فوجداری قانونی ترمیمی ایکٹ 2021 کی سینٹ سے منظوری کو عوام کے اتحاد و یکجتی کے متصادم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس بل کے نفاذ سے عوام کے مذہبی اور شہری حقوق سلب اور بین المذائب ہم آہنگی متاثر ہو گی۔ سینٹ سے متازعہ بل کی منظوری کے ردعمل میں اپنے ایک بیان میں قائد ملت جعفریہ پاکستان کے ترجمان نے واضح کیا کہ عوامی سطح پر پہلے ہی مذہبی منافرانہ و متصبانہ بل کو مسترد کیا جا چکاہے اور اس بل کے نفاذ کو روکنے کے لیے ممکنہ کوششیں جاری رہیں گی ان کے بقول پاکستان کی ایک بڑے مکتبہ فکر کی رائے لیے بغیر پہلے قومی اسمبلی کے عدم کورم میں اور پھر سینٹ کے آخری دن میں ڈھڑا ڈھڑ بلوں کو تھوک کے حساب سے منظور کرنے کے دوران کم سینٹرز کی حاضری میں اس بل کو عجلت میں پاس کرنا تعصب اور فرقہ واریت کو فروغ دینے کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا ملکی قوانین کی موجودگی میں ظالمانہ سزاوں کے اس بل کی منظوری نے قلعی کھول دی ہے اور یہ ثابت ہو رہا کہ عوام کے مذہبی اور سیاسی حقوق جو آئین پاکستان میں سب مذاہب کے پیروکاروں کو حاصل ہیں کو سلب کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے پاکستان میں عوام حقوق کی علمبرداروں سے اپیل کہ وہ اس بل کے خلاف ہر فورم پر آواز بلند کریں اور اس مذہبی منافرانہ اور متصبانہ بل کو مسترد کر دیں۔ ترجمان نے بل کے جزیات کو تکفیری انتہا پسندوں کے ہاتھ میں تیز دھار خنجر اور دھماکہ خیز مواد سونپنے کے مترادف قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ قانون عوام میں بدامنی، انتشار، تفریق اور تقسیم کا موجب بنے گا لہذا انہوں نے اپیل کی کہ عوام کو آپس میں لڑانے کی اس مذموم سازش کے خلاف ہر محب وطن شہری ترمیمی بل کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرے۔