• ٹیکسز کی بھر مار کا بجٹ، عوام سے محبت نہیں دشمنی کےمترادف ہے
  • مالی سال 2024-25 کے تعلیمی بجٹ پر نظر ثانی کا مطالبہ کرتے ہیں۔ مرکزی صدر جے ایس او پاکستان
  • امام خمینی کی برسی پر علامہ شبیر حسن میثمی کا پیغام
  • پاک ایران بارڈر پر پھنسے زائرین کا مسئلہ فوری حل کیا جائے شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان سندھ کی نو منتخب کابینہ کی حلف برداری
  • ڈاکٹر سید ابراہیم رئیسی اور ان کے ساتھیوں کی شہادت عالم اسلام کے لئے بہت بڑا دھچکا ہے
  • ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی اشتہار ناکافی ہے امن و امان کو تہہ و بالا کرنیوالوں کو نظراندازکردیاگیا
  • جعفریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کی مرکزی کابینہ کا اعلان کردیا گیا
  • علامہ شبیر حسن میثمی کی ایرانی صدر سید ابراہیم رئیسی اور ان کے رفقاء کی شہادت پر تعزیت
  • علامہ عارف حسین واحدی نے گورنر پنجاب سردار سلیم حیدر خان سے ملاقات کی

تازه خبریں

ایٹمی حیثیت کو برقرار رکھنے کے لئے ہر لحاظ سے داخلی استحکام ضروری ہے قائد ملت جعفریہ

ایٹمی حیثیت کو برقرار رکھنے کے لئے ہر لحاظ سے داخلی استحکام ضروری ہے قائد ملت جعفریہ

 پاکستان کا ایٹمی قوت بننا غیر معمولی کارنامہ،اس حیثیت کو برقرار رکھنے کیلئے ہر لحاظ سے داخلی استحکام ضروری قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد نقوی
 اقوام متحدہ کشمیر و فلسطین سمیت متنازعہ خطوں میں امن کیلئے کردار ادا کرنیوالوں کے تحفظ کیساتھ مظلوم اقوام معذرت خواہانہ رویے کی بجائے جراتمندانہ و قائدانہ کردار ادا کرے،قائد ملت جعفریہ
 دنیا میں امن تب قائم ہوگا جب طاقت کا توازن درست ہو، اس کیلئے بھی ضروری ہے کہ پاکستان کو توانا اور مستحکم رکھا جائے، یوم تکبیر پاکستان اور ورلڈ پیس کیپر ڈے پر پیغام
  راولپنڈی /اسلام آباد28 مئی 2024 ( جعفریہ پریس پاکستان )قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے 28 مئی یوم تکبیر پاکستان کے موقع پر اپنے پیغام میں کہاہے کہ پاکستان دنیا اور باالخصوص اسلامی دنیا میں ایٹمی پاور کے طور پر ابھرا ،یہ ایک غیر معمولی کارنامہ ہے ۔پاکستان کے ایٹمی پاور بننے کے بعد ارض وطن کو بین الاقوامی مقام و حیثیت حاصل ہوئی جسے برقرار رکھنے کیلئے ہر لحاظ سے داخلی استحکام انتہائی ضروری ہے۔انہوں نے 1948کے ا علان کردہ29 مئی امن پسندو ں کے عالمی دن (ورلڈ پیس کیپر ڈے)پر کہاکہ دنیا میں امن تب قائم ہوگا جب طاقت کا توازن درست ہو، اس کیلئے بھی ضروری ہے کہ پاکستان کو توانا اور مستحکم رکھا جائے۔ انہوں نے اقوام متحدہ کو متوجہ کرتے ہوئے کہاکہ اقوام متحدہ ایام کے اختصاص کیساتھ جنگی و متنازعہ علاقوں میں انسانی حقوق، امن و آگہی اور آزادی اظہار کیلئے خدمات انجام دینے والوں کے تحفظ کو بھی یقینی بنائیں اور اسکے ساتھ ساتھ کشمیر و فلسطین سمیت جن خطوں میں آج بھی بدامنی اور انارکی کی صورتحال ہے ان تصفیوں کے حل کیلئے معذرت خواہانہ کی بجائے قائدانہ اور جراتمندانہ کردار بھی ادا کرے، فلسطین میں ظلم کے پہاڑ توڑے گئے، عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ بھی آگیا، پوری دنیا استعماری مظالم پر چیخ اٹھی مگر افسوس اقوام عالم کے ایوان اقتدار آج بھی بے حسی کی تصویر بنے ہوئے ہیں جو بنیادی طور پر اقوام متحدہ کی ہی ناکامی ہے ۔