• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

امت مسلمہ کے تمام مسائل کا حل قرآن مجید فرقان حمید میں موجود ہے ۔ علامہ عارف حسین واحدی

جعفریہ پریس شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ عار ف حسین واحدی نے کہا ہے کہ امت مسلمہ کے تمام مسائل کا حل قرآن مجید فرقان حمید میں موجود ہے۔ افسوس آج ہم اسلامی تعلیمات سے دوری کے باعث مشکلات ، بحرانوں کا شکار ہیں۔ قرآن پاک نے اتحاد کا درس دیا اور ہم نے فراموش کردیا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے راولپنڈی اسلام آبادکے علماء کرام کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی23تا27رمضان المبارک ہفتہ نزول قرآن پاک منانے کا اعلان بھی اسی خاطرہے کہ قرآن کریم کے الہامی و آفاقی پیغام کو صحیح معنوں میں سمجھیں۔انہوں نے علماء کرام پر زور دیتے ہوئے کہا کہ قرآن پاک میں اللہ تبارک تعالیٰ نے ارشاد فرمایا کہ اللہ کی رسی کو مضبوطی سے تھامے رکھو۔ اس ہی آیت کریمہ کو لے کر علماء اتحاد امت کا عظیم کام سرانجام دینے میں اپنی کوششیں و توانائیاں صرف کریں۔انہوں نے کہا کہ امت کے تمام مسائل کا حل قرآن کریم میں موجود ہے۔ اگر قرآن کریم کی تعلیمات اسوہ رسول ؐ اور اہلبیت ؑ کے فرمودات پر عملدرآمد صحیح معنوں میں کریں تو کوئی وجہ نہیں کہ عالم اسلام کے خلاف ہونے والی سازشوں کو نہ صرف نابود کرسکتے ہیں بلکہ امت مسلمہ اپنا کھویا ہوا مقام بھی دوبارہ حاصل کرسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی دنیا منتشر نظر آرہی ہے۔جبکہ استعماری قوتیں اسرائیل کی پشت پناہی کررہی ہیں۔او آئی سی خاموش ہے۔ عرب لیگ سمیت دیگر تنظیموں کی ملک فلسطین پربے حسی بھی انتہائی افسوس ناک ہے ۔ ایسی صورتحال میں اب علماء کرام پر لاز م ہے کہ وہ قرآن کریم کی تعلیمات کوعام کرنے میں کردارا دا کریں۔اور اس الہامی پیغام کے ذریعے امت مسلمہ میں بیداری مہم چلائیں۔اور مظلوم فلسطینی بھائیوں سمیت جہاں جہاں بھی مسلمان ظلم و بربریت کا شکار ہیں انہیں اس سے چھٹکارے کیلئے اخلاقی حمایت کرسکیں۔اور اپنا موثر کردار ادا کرسکیں اس موقع پر انہوں نے سلامتی کونسل کی جانب سے غزہ کے معاملے پر سرد مہری پر بھی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر یہ صورتحال جاری رہی توایسا نہ ہو کہ امت مسلمہ کا اعتماد بھی اقوام متحدہ سے اٹھ جائے۔