• کوئٹہ میں ہونے والی دہشتگردی کی مذمت کرتے ہیں شیعہ علماء کونسل پاکستان
  • علامہ شبیر حسن میثمی کا علامہ سید علی حسین مدنی کے کتابخانہ کا دورہ
  • مفتی رفیع عثمانی کی وفات سے علمی حلقوں میں خلاء پیدا ہوا علامہ شبیر حسن میثمی
  • مسئول شعبہ خدمت زائرین ناصر انقلابی کا دورہ پاکستان
  • علامہ عارف واحدی کا سید وزارت حسین نقوی اور شہید انور علی آخوندزادہ کو خراجِ تحسین / دونوں عظیم شخصیات قومی سرمایہ تھیں
  • علامہ شبیر میثمی کی وفد کے ہمراہ علامہ افتخار نقوی سے ملاقات
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے وفد کی مفتی رفیع عثمانی کے فرزند سے والد کی تعزیت
  • سید ذیشان حیدر بخاری متحدہ طلباء محاذ کے مرکزی جنرل سیکرٹری منتخب ہوئے ۔
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کے اعلی سطحی وفد کی پرنسپل سیکرٹری وزیر اعظم پاکستان سے تعزیت
  • شیعہ علماء کونسل پاکستان کی نواب شاہ میں پریس کانفرنس

تازه خبریں

دفترقائد ملت جعفریہ پاکستان قم کے زیرانتظام شہید اعجازحسین نقوی کی نویں برسی نہایت عقیدت واحترام کے ساتھ منائی گئی

 جعفریہ پریس- دفتر قائد ملت جعفریہ پاکستان شعبہ خدمت زائرین قم کے زیرانتظام قائد ملت جعفریہ کے با وفا ساتھی ، تحریک جعفریہ کے فعال کارکن، شہید اعجاز حسین نقوی کی نویں برسی نہایت عقیدت و احترام کے ساتھ منائی گئی ۔ جس میں علماء  طلباء اور زائرین نے کثیر تعداد میں شرکت کی – جعفریہ پریس کی رپورٹ کے مطابق پروگرام کے آغاز میں شہید کے بلندی درجات کے لئے قرآن خوانی کی گئی ۔ قرآن خوانی کے بعد دفتر قائد ملت قم کے شعبہ زائرین کے انچارچ سید ناصر عباس نقوی انقلابی نے اپنے مخصوص انداز میں شہید کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا شہید عزاداری اعجازحسین نقوی شب و روز مکتب اہلبیت کی خدمت کرتے رہے، شہید عالم دین تو نہ تھے لیکن علماء اور قیادت کا پیغام احسن انداز میں عوام تک پہنچاتے تھے، شہید ہمیشہ قیادت اور مرکزیت سے مربوط رہنے کی تاکید کرتے تھے، جب قائد ملت کو پابند سلاسل کیا گیا تو شہید نے احتجاج سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جب تک ہمارا باپ جیل میں ہے ہم چین سے نہیں بیٹھ سکتے ۔ رپورٹ کے مطابق برسی کے اجتماع سے قم کی معروف علمی شخصیت حجۃ الاسلام علامہ سید سجاد حسین کاظمی  نے خصوصی خطاب کیا – علامہ سجاد حسین کاظمی  نے شہید اور شہادت پر تفصیلی کرتے ہوئے کہا کہ شہید اعجاز حسین نقوی شروع سے ہی انقلابی افکار کے مالک تھے اور انقلاب اسلامی نے ان کے نظریات کو اور زیادہ تقویت دی ۔ دینی و قومی خدمات ان کی اہم خصلت تھی عزادری معاملات میں ان کا خاص کردارتھا اور اسی مشن کی حفاظت میں اپنی جان تک قربان کردی-